فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس ، دستاویز احتساب عدالت میں جمع 

67

اسلام آباد (اے پی پی) احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف کے خلاف فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس کی سماعت (آج) جمعہ تک ملتوی کردی، تفتیشی آفیسر آج بھی اپنا بیان جاری رکھیں گے۔ جمعرات کو احتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک نے ریفرنس کی سماعت کی ۔خواجہ حارث کے معاون وکیل نے محمد نواز شریف کی ایک دن (جمعرات) استثنیٰ کی درخواست دائر کی جو عدالت نے منظور کر لی۔ سماعت کے دوران فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس میں نیب کے تفتیشی افسر محمد کامران نے اپنا بیان قلمبند کرواتے ہوئے بتایاکہ حسن نواز کی آف شور کمپنیوں کی فنانشل اسٹیٹمنٹس کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنوا رہے ہیں، آف شور کمپنیوں کا ریکارڈ کمپنیز ہاؤس لندن سے حاصل کیا گیا ہے۔ نیب کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ ایک ایم ایل اے موصول ہوا ہے جسے ریکارڈ کا حصہ بنایا جائے۔ نیب کے تفتیشی افسر نے حسن نواز کی جائداد سے متعلق دستاویزات عدالت میں پیش کر دیں۔ ایون فیلڈ ہاؤس سے متعلق لینڈ رجسٹری کا کورنگ لیٹر پیش کیا گیا۔رجسٹر آف ٹائٹل کی آفیشل کاپی عدالت میں پیش کی گئی۔ تفتیشی افسر کی جانب سے برطانیہ کے لینڈ رجسٹری ڈپارٹمنٹ کا تفتیشی افسر کو لکھا گیا خط عدالت میں پیش کیاگیا۔ اسٹین ہوپ ہاؤس میں گراؤنڈ فلور پر دفتر کی رجسٹری،15چیمبر اسٹریٹ لندن میں ‘فیٹلر اینڈ فرکن’ کی کاپی آف رجسٹری، ایج وئیر روڈ پر فلیٹ نمبر 8اور فلیٹ نمبر 121سے 125تک کی رجسٹری، ایج وئیر روڈ پر پارکنگ کی جگہ کی رجسٹری، کیڈاگون سکوئر لندن میں فلیٹ نمبر 4کی رجسٹری بھی پیش کی گئیں۔ معاون وکیل نے کہاکہ ہمارا اعتراض لکھ لیں۔ فاضل جج محمد ارشد ملک نے کہاکہ ہر بات پر آپ لوگوں کو اعتراض ہے،پہلے جملہ مکمل ہونے دیں بعد میں اپنا اعتراض لکھوا لینا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ