افغانستان :امریکی طیاروں کی وحشیانہ بمباری ،خواتین اور بچوں سمیت41 افراد شہید 

61

کابل (صباح نیوز+ آن لائن) افغانستان میں امریکی فوج کی وحشیانہ بمباری سے خواتین اور بچوں سمیت41 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔ حملے میں ایک مسجد بھی شہید ہوئی جبکہ کئی گھروں، گاڑیوں اورایک پیٹرول پمپ کو بھی تباہ کردیا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی طیاروں نے صوبہ پکتیا میں بمباری کی جس سے بھاری جانی ومالی
نقصان ہوا ہے۔امریکی فوج نے ضلع زرمت میں بمباری کی جبکہ اس دوران زمینی امریکی فوج نے بھی کارروائی کی۔ عینی شاہدین کے مطابق امریکی فوج نے شملزئی گاوں میں عام شہریوں کے گھروں پرشدید بمباری کی جس کے نتیجے میں خاصدار نامی شخص کا مکان مکمل طور پرتباہ ہوگیا اوروہاں موجود 15 افراد جن میں اکثریت خواتین اور بچوں کی تھی جاں بحق ہوگئے۔ بمباری کے بعد جب علاقہ مکین لوگوں کو ملبے سے نکالنے کے لیے وہاں پہنچے تو امریکی طیاروں نے پھر بمباری کردی جس سے مزید افراد جاں بحق ہوگئے۔ افغان میڈیا کے مطابق دونوں حملوں میں 35 افراد جاں بحق ہوئے جبکہ کئی گھربھی مکمل طورپر تباہ ہوگئے ہیں۔دوسری جانب صوبہ ننگرہار کے ضلع خوگیانی میں امریکی فوج کے حملے میں 6 عام شہری جاں بحق ہوگئے جبکہ ایک مسجد سمیت کئی گھروں ،پیٹرول پمپ اورکئی گاڑیاں بھی تباہ ہوگئیں۔علاوہ ازیں افغانستان میں دو متحارب گروپوں طالبان اور داعش کے درمیان جھڑپوں میں کم از کم 90 جنگجو ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہو گئے ۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق افغان شمالی خطے کے ترجمان محمد حنیف رضائی نے صحافیوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوے بتایا کہ متحارب گروپوں کے درمیان جھڑپیں صوبہ جوزجین میں ہوئیں جھڑپوں کے نتیجے میں کم از کم 90 جنگجو ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہو گئے آخری اطلاعات موصول ہونے تک فریقین کے درمیان جھڑپیں جاری تھیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ