قومی اسمبلی کا افتتاحی اجلاس آج ہوگا ،نومنتخب ارکان حلف اٹھائیں گے 

167

اسلام آباد ( نمائندہ جسارت)پندرہویں قومی اسمبلی کا افتتاحی اجلاس آج صبح 10 بجے اسپیکر ایاز صادق کی زیرصدارت ہوگا جس میں نومنتخب ارکان حلف اٹھائیں گے۔جس کے بعد ہر رکن اپنا نام لکھے گا اور دستخط کرے گا۔ا سپیکر و ڈپٹی اسپیکر کے انتخاب کے لیے کاغذات نامزدگی 14 اگست بروز منگل 12 بجے تک سیکرٹری قومی اسمبلی کے دفتر میں جمع کرائے جاسکیں گے۔ اسپیکر و ڈپٹی اسپیکر کا انتخاب خفیہ رائے شماری کے ذریعے 15 اگست کو کیا جائے گا۔ قومی اسمبلی میں اراکین کی حلف برداری کی تقریب کے دوران سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ بغیر سیکورٹی پاس کے کسی بھی شعبہ سے تعلق رکھنے والے افراد کا داخلہ ممنوع ہو گا۔ قومی اسمبلی میں اراکین کی نشستوں کا تعین حروف تہجی کی بنیاد پر کیا جائے گا۔ قومی اسمبلی کا اہم سیشن 17 اگست کو ہوگا جس میں نئے قائد ایوان یعنی ملک کے وزیراعظم کا انتخاب ہوگا، وزیراعظم کا انتخاب تقسیم کے عمل کے ذریعے ہوگا جس سے صاف نظر آئے گا کہ کس رکن نے وزیر اعظم کے منصب کے لیے کس امیدوار کو ووٹ دیا ہے جب کہ وزیر اعظم کی حلف برداری کی تقریب ایوان صدر میں 18 اگست کو ہو گی۔قومی اسمبلی سیکرٹریٹ نے نو منتخب ارکان کے حلف اور اسپیکر و ڈپٹی اسپیکر سمیت وزیر اعظم کے انتخاب کے لیے تمام انتظامات مکمل کرلیے ہیں۔ دوسری جانب تحریک انصاف کے وفد نے اتوار کو اسپیکرقومی اسمبلی ایازصادق سے ملاقات کی ، وفد میں وفد میں اسد قیصر، پرویز خٹک، عمر ایوب اور فواد چودھری شامل تھے جنہوں نے ایاز صادق کووزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں شرکت کی دعوت بھی دی ہے ۔ملاقات میں قومی معاملات پر ساتھ چلنے پر اتفاق ہوگیا ہے۔ا سپیکرقومی اسمبلی نے تحریک انصاف کو تمام اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ رابطوں کا مشورہ دے دیا جب کہ پی ٹی آئی نے الیکشن سے متعلق تحفظات پر بات کرنے کی پیشکش کی ہے۔ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی ترجمان فواد چودھری کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کو ساتھ لے کر چلنا عمران خان کا وژن ہے ،حکومت اور اپوزیشن ساتھ نہیں چلیں گے تو معاملہ آگے نہیں بڑھے گا، ہم چاہیں گے کہ متحدہ مجلس عمل اور دیگر جماعتوں کو بھی ساتھ لے کرچلیں کیوں کہ پاکستان اس وقت مسائل میں گھرا ہوا ہے، معیشت سمیت دیگر اہم امور پر چیلنجز درپیش ہیں لہٰذا تمام مسائل کو مل کر حل کرنا چاہتے ہیں، اس وقت ملک کو یکجہتی کی ضرورت ہے۔ علاوہ ازیں پی ٹی آئی وفد نے پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ سے ملاقات کی اور ان سے پی ٹی آئی کی جانب سے اسپیکرکے لیے نامزد امیدوار اسد قیصر کے حق میں دستبردار ہونے کی درخواست کی۔ بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا ہے کہ میں اور نوید قمر سینئر ترین پارلیمنٹرین ہیں ہم میں سے کسی کو اسپیکر بنایا جانا چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہتحریک انصاف کے سے وفد خوشگوار ماحول میں ملاقات ہوئی ہے،ہماری کوشش ہو گی کہ تحریک انصاف کی حکومت کو کام کرنے کا موقع دیا جائے اور ملکی و قومی مفاد میں کی جائے والی قانون سازی کی بھر پور حمایت کریں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ