***۔۔۔۔۔۔گوادر۔۔۔۔۔۔***

50

گوادر(نمائندہ جسارت)ایم پی اے میر حمل کلمتی کا گوادر پریس کلب کا دورہ ۔گوادر پریس کلب کے صحافیوں سے حال احوال، اپنے ایم پی اے فنڈز سے پریس کلب کیلیے 15لاکھ روپے کی گرانٹ کا اعلان ۔گوادر پریس کلب کے صحافیوں کا اظہار تشکر ۔ ایم پی اے میر حمل کلمتی گوادر پریس کلب کے دورے پر پہنچ گئے ۔گوادر پریس کلب پہنچنے پر صدر پریس کلب بہرام بلوچ اور دیگر صحافیوں نے میر حمل کلمتی کا استقبال کیا۔ اس موقع پر ایم پی اے کو گوادر پریس کلب کے تعمیراتی کام کا معائنہ کرایا گیا بعد ازاں میر حمل کلمتی سے صحافیوں نے حال احوال کی۔ اس موقع پر میر حمل کلمتی نے گوادر پریس کلب کے صحافیوں کی مثبت تعمیری اور ذمہ دارانہ صحافت کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ گوادر کے صحافیوں نے ہمیشہ عوام کو درپیش مسائل اجاگر کیے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ وہ گوادر پریس کلب کے صحافیوں کو درپیش مسائل سے آگاہ ہیں ۔ انشاء اللہ ان کے مسائل حل کرانے کی کوشش کی جائے گی ۔ اس موقع پر انھوں نے اپنے ایم پی اے فنڈز سے گوادر پریس کلب کیلیے 15 لاکھ روپے کی گرانٹ کا اعلان کیا اور کہا کہ گوادر پریس کلب کے صحافیوں کو لیپ ٹاپ کی فراہمی کی بھی کوشش کی جائے گی۔



ا س موقع پر گوادر پریس کلب کے صدر بہرام بلوچ اور دیگر نے ایم پی اے میر حمل کلمتی سے اظہار تشکر کیا** پولیس ، انتظامیہ اور عوام سے ملکر گوادر شہر کی سیکورٹی پلان بنائیں گے، پاک فوج اور عوام ایک دوسرے کیلیے لازم و ملزوم ہیں ، شہر میں نئے چیک پوسٹیں عوام کی تحفظ کیلیے ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق ضلعی انتظامیہ کی زیر اہتمام ڈسٹرکٹ ہال گوادر میں سیکورٹی کانفرنس سے بریگیڈئیر کمال اصفر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاک فوج عوام کے بغیر نا مکمل ہے ۔ عوام اور افواج ایک دوسرے کیلیے لازم و ملزوم ہیں ۔ گوادر شہر کی سیکورٹی ہم سب کی ذمہ داری ہے ۔ پاک فوج اور پولیس ضلعی انتظامیہ اور عوام کے ساتھ ملکر سیکورٹی پلان بنائیں گے۔انھوں نے کہا کہ شہر میں زیر تعمیر چیک پوسٹیں عوام اور شہریوں کی تحفظ کیلیے بنائی جا رہی ہیں ۔ اس موقع پر ایم پی اے گوادر میر حمل کلمتی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گوادر کے لوگ پرامن ہیں اگر پولیس و لیویز کی جدید خطوط پر ٹریننگ کی جائے تو وہ شہر کی امن و امان برقرار رکھنے میں بہتر ثابت ہو سکتے ہیں **بلوچ طلبہ کو سازش کے تحت تعلیم سے دور رکھا جارہا ہے ۔قائداعظم یونیورسٹی اسلام آباد میں پرامن طلبہ پر تشدد ظلم کا بدترین نشانی ہے۔بلوچ طلبہ کے ساتھ ناانصافی و ظلم پر خاموش نہیں بیٹھ سکتے۔ان خیالات کا اظہار بی ایس او گوادر کے آرگنائزر نصیر احمد نگوری،ڈپٹی آرگنازئزر وقاص جام،کالج یونٹ کے ڈپٹی سیکرٹری بالاچ قادر اور سابق صدر محمد جان حسن نے گوادر پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ قائداعظم یونیورسٹی اسلام آباد میں زیرتعلیم بلوچ طلبہ پر تشدد اور حملے کے خلاف بی ایس او گوادر کی جانب سے گوادر پریس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ،احتجاجی مظاہرے سے خطاب کر تے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں بلوچ طلبہ پر پولیس کا تشدد انتہائی افسوسناک و قابل مذمت ہے جس سے واضح ہے کہ پاکستان کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں بلوچ طلبہ کو برداشت نہیں کیا جاسکتا۔انہوں نے کہا کہ اپنے جائز مطالبات پر پرامن احتجاج ہر کسی کا جمہوری حق ہے جبکہ اسلام آباد پولیس اور یونیورسٹی انتظامیہ نے بلوچ طلبہ کے پرامن احتجاج پر حملہ کرکے ،نہتے طلبہ پر تشدد کرکے ظلم و ناانصافی کا حد کردیا ہے ملک کے ہر کونے میں بلوچ طلبہ کے لیے تعلیم کے دروازے بندکیے جارہے ہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ