سینیٹ اجلاس : آئی سی ٹی کے طلبہ کیلیے الگ کوٹا مختص کرنے کی حکومتی قررداد مسترد

45

اسلام آباد(آن لائن)حکومت نے ملک بھر میں سرکاری میڈیل اورڈینٹل کالجز میں آئی سی ٹی کے طلبہ کے لیے الگ کوٹا مختص کرنے کی قررداد مسترد کر دی۔گزشتہ روز سینیٹ میں سینیٹر محمد عتیق شیخ نے قرارداد پیش کرتے ہوئے کہا کہ سرکاری میڈیکل اور ڈینٹل کالجز میں آئی سی ٹی کے طلبہ کے لیے الگ کوٹا مختص کیا جائے۔ جس پر ایوان نے ان کی رائے سے اتفاق نہ کرتے ہوئے قرارداد کو مسترد کردیا جبکہ سینیٹر بہرہ مند خان تنگی کی جانب سے پیش کی جانیوالی قرارداد میں حکومت سوئی نادرن گیس پائپ لائن لمیٹڈ کے ہیڈکوارٹر کو لاہور سے اسلام آباد منتقل کرے تاہم اپوزیشن کے متفقہ فیصلے کے بعد سینیٹر بہرہ مند خان تنگی کو رضا مندی پر مجوزہ قرارداد کے حوالے سے آئندہ تاریخ تک ایوان میں پیش نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔دوسری جانب اپوزیشن کے دیگر ارکان سینیٹر شیری رحمن ، میاں رضا ربانی ، راجا ظفر الحق ، بہرہ مند خان تنگی ، سید محمد علی شاہ جموٹ ، امام دین شوقین ، سلام الدین شیخ ، ڈاکٹر سکندر مندھر ، محمد یوسف بادینی ، انجینئر رخسانہ زبیری ، گیلان چند ، انور لال دین ودیگر نے ایوان میں سفارش کی کہ پاکستان انٹرنیشنل ائر لائن کا ہیڈکوارٹر اسلام آباد میں منتقل کرنے کے بجائے کراچی میں ہی رہنے دیا جائے، جس پر مشاہد اللہ خان نے سینیٹ میں کہا کہ حکومت سوچ رہی ہے وہ ایسا کرنہیں سکے گی، پی آئی اے کو یہاں شفٹ کرنے کی باتیں محض باتیں ہوسکتی ہیں ، عملی اقدامات نہیں کیے جاسکتے ۔ وزیر ہوا بازی غلام سرور خان نے سینیٹ کو بتایا کہ حکومت قطعاً ایسا نہیں سوچ رہی ہے کہ پی آئی اے ہیڈکوارٹرز کو کراچی سے اسلام آباد شفٹ کیا جائے، اگر کوئی ایسی تجویز سامنے آئی تو ایوان سے مشاورت کرکے قدم اٹھائیں گے۔بعد ازاں حکومت کی جانب سے مخالفت کے باوجود اپوزیشن نے پی آئی اے ہیڈکوارٹر کو اسلام آباد میں شفٹ نہ ہونے کی قرارداد ایوان سے پاس کرا لی ۔