جرمنی حملے کی صلاحیت رکھنے والے ڈرون اسرائیل سے لیز پر لے گا

41

برلن (انٹرنیشنل ڈیسک) جرمن پارلیمانی کمیٹی کی طرف سے اسرائیلی ڈرون لیز پر حاصل کرنے کی اجازت دیے جانے کے بعد جرمن فوج تاریخ میں پہلی مرتبہ مسلح کیے جانے کی صلاحیت رکھنے والے اسرائیلی ساختہ ’’ہیرون ٹی پی‘‘ ڈرون اُڑائے گی۔ اس منصوبے پر ایک ارب امریکی ڈالرز کے برابر لاگت آئے گی۔ جرمن پارلیمان کی بجٹ کمیٹی کے ارکان نے اسرائیلی ساختہ ’’ہیرون ٹی پی‘‘ ڈرون لیز پر لینے کی حمایت کی ہے۔ جرمن فوج گزشتہ کئی برسوں سے میزائل بردار ڈرونز کے حصول کی کوشش میں تھی۔ جرمن وزیر دفاع نے اس فیصلے کو جرمن فوج کے لیے ایک اہم اشارہ قرار دیا ہے۔ خاتون وزیر دفاع بھی سال
2016ء کے اوائل سے یہ اجازت حاصل کرنے کی کوشش کر رہی تھیں۔ جرمن فوج پہلے ہی ملک میں تیار کردہ چھوٹے سائز کے ڈرونز کے علاوہ اسرائیلی ساختہ درمیانے سائز کے نگرانی کرنے والے ڈرون ’’ہیرون ون‘‘ استعمال کر رہی ہے۔ یہ ڈرون افغانستان اور مالی میں استعمال کیے جا رہے ہیں۔ ہیرون ون کے پروں کا پھیلاؤ 16.6 میٹر ہے اور یہ اسلحہ لے جانے کے لیے بہت چھوٹا ہے۔ بدھ کے روز جرمن پارلیمان کی کی بجٹ کمیٹی نے جدید ’’ہیرون ٹی پی‘‘ ماڈل کو لیز پر حاصل کرنے کے لیے 895 ملین یورو کی رقم منظور کر لی جو تقریباً ایک ارب امریکی ڈالرز کے برابر بنتی ہے۔ یہ ڈرون ’اسرائیل ایرو اسپیس انڈسٹریز‘ سے خریدے جائیں گے۔
جرمنی ؍ ڈرون

Print Friendly, PDF & Email
حصہ