شہباز شریف کی ای سی ایل میں نام ڈالنے کیخلاف درخواست، حکومت کو نوٹس

28
لاہور: مسلم لیگ ن کے سربراہ شہباز شریف آشیانہ ہاؤسنگ کیس میں پیشی کے لیے آرہے ہیں
لاہور: مسلم لیگ ن کے سربراہ شہباز شریف آشیانہ ہاؤسنگ کیس میں پیشی کے لیے آرہے ہیں

لاہور (نمائندہ جسارت) لاہور ہائیکورٹ نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی نام ای سی ایل میں نام شامل کرنے کیخلاف درخواست پر وفاقی حکومت اور نیب کو نوٹس جاری کر دیے ہیں، نیب نے شہباز شریف کی درخواست کی مخالفت کی۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس ملک شہزاد احمد خان کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے سماعت کی جس میں شہباز شریف نے اپنا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا اقدام چیلنج کیا ہے۔ شہباز شریف کے وکیل اعظم نذیر تارڑ نے نشاندہی کی کہ بیرون ملک سفر پر پابندی بنیادی حقوق کے منافی ہے اور ای سی ایل میں نام شامل کرنے سے پہلے اپنا مؤقف پیش کرنے کا کوئی موقع نہیں دیا گیا۔ وکیل نے دعویٰ کیا کہ شہباز شریف کا بلاجواز اور ٹھوس مواد کے بغیر نام ای سی ایل میں شامل کیا گیا بلکہ ای سی ایل میں نام شامل کرنا حقائق اور قانون دونوں سے متصادم ہے۔ وکیل نے بتایا کہ شہباز شریف اپنی سیاسی جماعت کے سربراہ ہونے کے ساتھ ساتھ اپوزیشن لیڈر بھی ہیں۔ ان کو بیرون سفر کرنا پڑتا ہے۔ وکیل نے استدعا کی کہ 21 فروری کو شہباز شریف کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا اقدام کالعدم قرار دیا جائے۔ درخواست پر مزید سماعت 12 مارچ کو ہوگی۔