وفاقی کابینہ، سعودی عرب کے ساتھ اربوں ڈالر کے معاہدوں کی منظوری

192
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان وفاقی کابینہ کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان وفاقی کابینہ کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں

اسلام آباد (خبرایجنسیاں) وفاقی کابینہ نے سعودی عرب کے ساتھ اربوں ڈالر کے معاہدوں کی منظوری دے دی۔ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس میں100 روزہ ایجنڈے پر عمل درآمد کا جائزہ لیا گیا جبکہ وزرا نے اپنی کارکردگی رپورٹ پیش کی۔ اجلاس کے بعد وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے میڈیا کو کابینہ کے فیصلوں کی تفصیلات سے آگاہ کیا۔فواد چودھری نے کا کہنا تھا کہ سعودی عرب پاکستان میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کرے گا،گوادر میں آئل ریفائنری لگانے کے لیے وفاقی کابینہ نے منظوری دے دی ہے،یہ ایک جدید ریفائنری ہو گی اس کی استعداد اور سرمایہ کاری کے حوالے سے معاملات کو بعد میں حتمی شکل دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ گوادر میں اس حوالہ سے اراضی کی نشاندہی بھی کی گئی ہے، معاہدے کی حتمی شکل کے بعد صوبائی حکومت کو بھی اعتماد میں لیا جائے گا۔انہوں نے بتایا کہ ترکی نے اسلام آباد میں یونیورسٹی بنانے کا اعلان کیا ہے۔وزیراطلاعات نے بتایا کہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ نیلم جہلم ہائیڈرل پروجیکٹ، نیواسلام آباد انٹرنیشنل ائرپورٹ اور اسٹیل مل کے منصوبوں کا فرانزک آڈٹ کرایا جائے گا۔وفاقی کابینہ نے اسحاق ڈار کی جانب سے بھرتی کیے گئے نیشنل بینک، فرسٹ ویمن بینک، زرعی ترقیاتی بینک، ایس ایم ای بینک کے صدور کو برطرف کر دیا ہے۔ ریگولیٹری اتھارٹیز میں ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک جمیل احمد، ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک شمس الرحمن، خواجہ خلیل، مسابقتی کمیشن آف پاکستان کے ایم ایس واڈیا، محمد سلیم اور شہزاد انصر کو بھی عہدوں سے ہٹادیاگیا۔فواد چودھری نے کہاکہ یہ تمام تقرریاں غیر قانونی تھیں،صرف کابینہ ہی اداروں میں تقرر کی منظوری دے سکتی ہے۔انہوں نے بتایا کہ پرویز خٹک کی سربراہی میں 2 ہزار 467 سرکاری املاک کے درست استعمال کے لیے کمیٹی قائم کر دی گئی ہے۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ وزیراعظم نے وفاقی کابینہ میں توسیع کی منظوری دے دی ،5 وفاقی وزرااور ایک وزیرمملکت آج حلف اٹھائیں گے۔ اس موقع پر وزیرپیٹرولیم غلام سرور خان نے کہا کہ چین کو سعودی سرمایہ کاری پر کوئی اعتراض نہیں، آئل ریفائنریز کے لییکسی بھی ملک کو خوش آمدیدکہیں گے۔ تیل کی تلاش کے لیے اوپن بڈنگ کے ذریعے سرمایہ کاری لائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ