وزرا مشیروں کی فوج اور اشیا کی قیمتوں میں اضافے نے عوام کے ہوش اڑا دیے ، سراج الحق

155
لاہور: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق اجتماع ارکان سے خطاب کررہے ہیں
لاہور: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق اجتماع ارکان سے خطاب کررہے ہیں

لاہور(نمائندہ جسارت)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ عوام کو ریلیف دینے کے لیے حکومت کو اپنے وعدوں پر عملدرآمد کرناچاہیے ۔ وزرا اور مشیروں کی فوج ظفر موج اور تیل ، بجلی ، گیس اور کھاد کی قیمتوں میں اضافے کی سمریاں عوام کے ہوش اڑا رہی ہیں ۔ جماعت اسلامی تمام تر تحفظات کے باوجود حکومت کو موقع دینا چاہتی ہے مگر حکومت سابق حکومتوں کے ٹریک پر چڑھتی نظر آرہی ہے ۔ دن بدن مایوسی اور ناامیدی کے سائے گہرے ہورہے ہیں ۔ عوام محض حکمرانوں کی تبدیلی سے مطمئن نہیں ہوں گے۔ جب تک عام آدمی کی مشکلات اور مصائب میں کمی نہیں آئے گی ، حکومت پر عوام کا اعتماد
متزلزل رہے گا ۔ وزیر خارجہ کا افغانستان کا دورہ ، جلال آباد قونصل خانے کی بحالی ، مشرقی اقتصادی کمیشن اور افغانستان سے درآمدات پر ڈیوٹی کا خاتمہ خوش آئند ہے اس سے دونوں برادر اسلامی ممالک کے تعلقات بڑھیں گے اور دوریاں ختم ہوں گی ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے منصورہ میں جماعت اسلامی لاہور کے اجتماع ارکان سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ ، ڈپٹی سیکرٹری جنرل اظہر اقبال حسن ، محمد اصغر ، ذکر اللہ مجاہد و دیگر بھی موجود تھے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پی ٹی آئی حکومت نے ابھی تک کوئی ایسا نمایاں کام نہیں کیا جس سے عا م آدمی کو ریلیف ملتا ، بلکہ موجودہ حکومت بھی دن بدن اسی ٹریک کی طرف بڑھتی نظرآرہی ہے جس پر سابق حکومتیں چلتے ہوئے عوامی نفرت اور غضب کا شکار ہوئیں ۔حکومت نے ابھی تک لوٹی دولت واپس لانے اوربے لاگ احتساب سے اپنے نعروں اور وعدوں کی طرف ایک قدم نہیں اٹھایا۔ انہوں نے کہاکہ نیب اور احتساب کے اداروں کے پاس ملک کو لوٹنے والے بڑے مگر مچھوں کی لسٹیں موجود ہیں ۔ نیب میں کرپشن کے 150 میگا اسکینڈلز کا مکمل ریکارڈ پڑا ہے عوام کو بتایا جائے کہ حکومت کس مصلحت کے تحت قوم کے ان مجرموں کو ڈھیل دے رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی کی’’ احتساب سب کا ‘‘ اور کرپشن فری پاکستان تحریک جاری ہے ، ہم چاہتے ہیں کہ لوٹی گئی قومی دولت پاکستان لائی جائے بیرونی بینکوں میں موجود کرپشن کا پیسہ واپس آئے اور جنہوں نے عوام کو غربت ، مہنگائی ، بے روزگاری اور لوڈشیڈنگ کے تحفے دیے اور قومی خزانہ لوٹ کر دبئی ، لندن اور پاناما میں بزنس امپائرز کھڑی کیں ، انہیں احتساب کے کٹہرے میں لایا جائے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستان کا 375 ارب ڈالر کا خطیر سرمایہ بیرونی بینکوں میں موجود ہے اگر وہ واپس آجائے تو نہ صرف بجلی ، گیس اور تیل کی قیمتوں میں عوام کو ریلیف دیا جاسکتاہے اور آئی ایم ایف اور ورلڈبینک سمیت کسی کے آگے ہاتھ نہیں پھیلانا پڑیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم ملک میں ڈیموں اور پانی کے ذخائر کی تعمیر کی مکمل حمایت کرتے ہیں ، ہماری آنے والی نسلوں اور پاکستان کے مستقبل کے لیے پانی بنیادی ضرورت ہے ۔ پانی کے بغیر زندگی کا تصور نہیں کیا جاسکتا۔ زراعت اور صنعت دونوں کا وجود پانی سے ہے۔ لوڈشیڈنگ کے اندھیروں سے نکلناہے تو ڈیم تعمیر کرنا ہوں گے لیکن حکومت کو جذباتی فیصلوں اور اعلانات کے بجائے عملی کام کی طرف آنا ہوگا ۔ سینیٹر سراج الحق نے ارکان جماعت کو آنے والے بلدیاتی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے بھر پور تیاری کی ہدایت کی اور کہاکہ بلدیاتی انتخابات میں کامیابی آنے والے قومی و صوبائی انتخابات میں کامیابی کے لیے نہایت ضروری ہے اس لیے کارکنان ابھی سے بلدیاتی انتخابات کی تیاری شروع کردیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ