بہادرآباد میں اسٹریٹ لائیٹس کے پول پر وڈیو اسٹیمر کی غیر قانونی تنصیب

57

کراچی(اسٹا ف رپورٹر) میونسپل کمشنر ضلع شرقی نے عدالت عظمی ٰکے احکامات کو نظر انداز کرتے ہوئے بہادر آباد کی مرکزی شاہراہ کی سینٹرل آئی لینڈ کے اسٹریٹ لائٹس کے پول پر 25کے لگ بھگ وڈیو اسٹیمر نصب کرا دیے ہیں۔ ویڈیو اسٹیمر کی تنصیب غیر قانونی ہے جس کے باعث ٹریفک حادثات کا خطرہ ہوتا ہے ان کو نصب کرنے پرعدالتی پابندی عائد ہے مگر ضلع شرقی ڈسٹرکٹ ایسٹ کی حدود میں بہادر آباد کی مرکزی شاہراہ کی سینٹرل آئی لینڈ کے اسٹریٹ لائٹس کے پول پر 25کے لگ بھگ یہ وڈیو اسٹیمر نصب کردیے گئے ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ وڈیو اسٹیمر نصب کرانے میں کے ایم سی کے ایک منتخب نمائندے کا رشتے دار ملوث ہے جس کو میونسپل کمشنر ضلع شرقی کی مکمل سرپرستی حاصل ہے۔ذرائع نے بتایا کہ ان اسٹیمرز کی تنصب کی اجازت کے لیے لاکھوں روپے وصول کر کے شہریوں کی زندگیوں کو داؤپر لگانے کے ساتھ ساتھ عدالتی احکامات کی بھی دھجیاں اڑا دی گئی ہیں۔اس سلسلے میں میونسپل کمشنر ضلع شرقی( ڈسٹرکٹ ایسٹ) کا کہنا ہے کہ ایڈورٹائزر نے عدالتی اسٹے حاصل کررکھا ہے۔تاہم بلدیاتی ماہرین کا کہنا ہے کہ عدالت عظمیٰ کے احکامات کے خلاف اسٹے آرڈر حاصل نہیں کیا جاسکتا ہیں۔ جنوری 2018میں عدالتی احکامات کے بعد ضلع شرقی کے مختلف مقامات سے ہٹائے جانے والے 14میگا بل بورڈ میونسپل کمشنر کی آشیر باد کے بعد دوبارہ
نصب کردیے گئے ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ان میگا اسٹرکچر میں سے اللہ والی چورنگی کے قریب لگایا جانے والا میگا اسٹرکچر کا حامل بل بورڈ سندھ کی ایک اہم سیاسی شخصیت کا ہے۔ واضح رہے کہعدالت عظمیٰ کے احکامات پر عملدرآمد کے لیے کمشنر کراچی نے تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کو فوری طور پر ایسے میگا اسٹرکچر کے حامل اشتہاری بورڈ فوری ہٹانے کی ہدایت کی تھی مگر ضلع شرقی میں 14بل بورڈ ہٹائے جانے کے چند یوم بعد ہی دوبارہ نصب کرادیے گئے تھے جو تاحال اب بھی موجود ہیں۔اور بدستور شہریوں کے لیے جانی اور مالی نقصان کے خدشہ کا سبب بنے ہوئے ہیں۔
غیر قانونی اسٹیمرنصب

Print Friendly, PDF & Email
حصہ