پارلیمنٹ حملہ کیس‘ وزیراعظم کو حاضری سے مستقل استثنامل گیا

105

اسلام آباد (نمائندہ جسارت) انسداد دہشت گردی عدالت نے پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ کیس میں وزیراعظم عمران خان کو حاضری سے مستقل استثنا دے دیا۔ رپورٹ کے مطابق مسلم لیگ (ن) کی گزشتہ حکومت کے خلاف 2014ء میں تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک کی جانب سے
اسلام آباد میں دیے گئے126 روزہ دھرنے کے دوران ہنگامہ ہوا اور کارکنان نے پی ٹی وی اور پارلیمنٹ پر دھاوا بول دیا تھا۔ اس موقع پر ریڈزون میں ہنگامہ آرائی پر مقدمہ درج کیا گیا جس میں موجودہ وزیراعظم عمران خان، نومنتخب صدر عارف علوی، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور دیگر نامزد ہیں۔ وزیراعظم نے3 روز قبل اپنی قانونی ٹیم کو پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ کیس میں بریت کی درخواست دائر کرنے کی ہدایت کی تھی۔ عمران خان اس سے قبل مقدمے سے دہشت گردی کی دفعات نکالنے اور مقدمہ سیشن کورٹ منتقل کرنے کی درخواست کرچکے ہیں جسے انسداد دہشت گردی عدالت کی جانب سے مسترد کیا جاچکا ہے۔ گزشتہ روز انسداد دہشت گردی عدالت میں پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ کیس کی سماعت ہوئی۔ دوران سماعت عمران خان کے وکیل بابر اعوان پیش ہوئے اور وزیراعظم کی حاضری سے مستقل استثنا کی درخواست دائر کی۔ بابر اعوان کا موقف تھا کہ ملزم ایک سے زیادہ ہو تو شریک ملزمان کو حاضری سے استثنا مل سکتا ہے۔ اس موقع پر پراسیکیوٹر نے کہا کہ عمران خان کو حاضری سے استثنا دینے پر کوئی اعتراض نہیں جس کے بعد انسداد دہشت گردی عدالت نے عمران خان کو حاضری سے مستقل استثنا دے دیا۔ عمران خان کی طرف سے بابر اعوان نے پیشی کے لیے بیان حلفی جمع کرادیا اور کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی جگہ میں پیش ہوا کروں گا اور کیس کی کسی بھی اسٹیج پر عدالت کہے گی تو عمران خان پیش ہوجائیں گے۔ مقدمات کی سماعت یکم اکتوبر تک کے لیے ملتوی کردی۔
استثنا مل گیا

Print Friendly, PDF & Email
حصہ