وفاقی پولیس میں رشوت کے عوض کرپٹ افسران من پسند عہدوں پر تعینات

57

اسلام آباد(آن لائن)وفاقی پولیس کے سینئر افسران نے وزیر مملکت داخلہ شہریار آفریدی کے احکامات کی آڑ میں ایماندار ،تعلیم یافتہ اور اچھی شہرت کے حامل افسران کو تعینات کرنے کے بجائے مبینہ طور پر لاکھوں روپے رشوت کے عوض کرپٹ اور بری شہرت رکھنے والے افسران کو اسلام آباد کے من پسند عہدوں پر تعینات کردیا ہے جبکہ مرضی کے عہدوں پر تعیناتی کے لیے معاملات طے نہ پانے پر تاحال ایس پی اور ایس ڈی پی اوز کو تبدیل نہیں کیا جا سکا ہے۔ذرائع کے مطابق بھاری رشوت دے کر من پسند عہدے پانے والے میں ایس ایچ او کوہسار عبدالرزاق ،ایس ایچ او کھنہ لیاقت علی ،ایس ایچ او سہالہ گلفراز ، ایس
ایچ او بنی گالہ عاشق ،ایس ایچ او مارگلہ حبیب الرحمن،ایس ایچ او شالیمار ارشد محمود ،ایس ایچ اور ترنول اقبال گجر ،ایس ایچ او شمس کالونی انیس اکبر ،ایس ایچ او گولڑہ ارشد علی ،ایس ایچ او شہزاد ٹاؤن محمد بشیر ،اے ایس آئی ثمینہ سرور کو ایس ایچ او ویمن شامل ہیں جو دیکھ کر بھی درست انگلش نہیں پڑھ سکتے ہیں۔ جو وفاقی ماڈل پولیس کی اہلیت اور افسران کی غیر ذمے داری کا واضح ثبوت ہے ۔ یاد رہے کہ چند دن قبل وزیر مملکت داخلہ شہریار آفریدی نے پولیس لائن ہیڈ کوارٹر کا دورہ کیا جہاں انہوں نے اسلام آباد پولیس کی کاکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے آئی جی اسلام آباد جان محمد کو حکم دیا کہ اسلام آباد میں تعینات تمام ایس ڈی پی اوز اور تھانوں کے ایس ایچ اوزکو فوری تبدیل کیا جائے اور ایماندار اور پڑھے لکھے افسران کو تعینات کیا جائے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ