پانی کے مسئلے پر بھارت سے کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا ،سید علی ظفر 

35

اسلام آباد(اے پی پی) نگراں وفاقی وزیر قانون و انصاف سید علی ظفر نے کشن گنگا اور رتلے ہائیڈرو پاور پلانٹس سے متعلق تنازعات میں پیشرفت کا نوٹس لیتے ہوئے عالمی بینک کی جانب سے ثالثی عدالت کی جیوری کی تعیناتی میں تاخیر پر تشویش کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ پانی ہمارے ملک کا سب سے اہم مسئلہ ہے اور بھارت کی جانب سے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی سے ہنگامی ترجیحی بنیادوں پر نمٹنے کی ضرورت ہے اور اس معاملے پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا کیونکہ پاکستان کے قیمتی پانی کا مستقبل خطرے میں ہے۔سید علی ظفر کی زیر صدارت اجلاس جمعرات کو منعقد ہوا۔اجلاس میں پاکستان کے حوالے سے
بین الاقوامی تنازعات سے متعلق امور زیر بحث لائے گئے۔اٹارنی جنرل اور لا ڈویژن کے حکام نے ان معاملات پر اجلاس کو بریفنگ دی۔ نگراں وفاقی وزیر کو کرکی،ریکو ڈک سمیت کمرشل تنازعات کے علاوہ سندھ طاس معاہدے سے متعلق بھی تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں