قصورواقعہ پنجاب حکومت کے منہ پرطمانچہ ہے، معراج الہدیٰ

241

کراچی (اسٹاف رپورٹر) جماعت اسلامی سندھ کے امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے قصور واقعے کو درندگی اورگڈگورننس کی دعویدار پنجاب حکومت کے منہ پر طمانچہ قرار دیتے ہوئے زور دیا ہے کہ واقعے میں ملوث ملزمان کو گرفتارکرکے کیفرکردار تک پہنچایا جائے اور آئندہ اس طرح کے دلخراش واقعات کے سدباب کے لیے مؤثر اقدامات کیے جائیں۔ انہوں نے آج ایک بیان میں کہا کہ ایک سال کے دوران 12 معصوم بچیوں کو اغوا کرکے درندگی کا نشانہ بنا کر قتل کردینے کے واقعات اندھیر نگری اور حکومتی نااہلی کا
واضح ثبوت ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب صوبے میں پولیس کلچر کی اصلاح اور گڈگورننس سمیت ترقی کے دعوے کرتے نہیں تھکتے! مگر حالیہ واقعات نے ان کے تمام دعوؤں کو کھوکھلا ثابت کر دیا ہے۔ عوام کو انصاف کی فراہمی میں ناکام حکومت کا نہتے عوام پر براہ راست گولیاں برسانا انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور عوام سے پرامن احتجاج کا حق بھی چھیننے کے مترادف ہے۔ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے بعد قصور واقعے کا مقدمہ بھی پنجاب کے حکمرانوں کے گلے میں پڑے گا، جس سے وہ بری الذمہ نہیں ہوسکتے۔ جماعت اسلامی کے صوبائی امیر نے معصوم بچی زینب اور احتجاج کے دوران شہید ہونے والوں کے لواحقین سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے مرحومین کے لیے مغفرت اور پسماندگان کے لیے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ