ٹرمپ کی مودی سے پھر ملاقات‘ دوستی کا راگ

50
منیلا: امریکی صدر کی آمد کے خلاف پُرتشدد احتجاج ہو رہا ہے‘ ڈونلڈ ٹرمپ اپنے دوست نریندر مودی سے ملاقات کر رہے ہیں
منیلا: امریکی صدر کی آمد کے خلاف پُرتشدد احتجاج ہو رہا ہے‘ ڈونلڈ ٹرمپ اپنے دوست نریندر مودی سے ملاقات کر رہے ہیں

منیلا (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے درمیان قربتیں روز بہ روز بڑھتی ہی جا رہی ہیں۔ دونوں رہنماؤں نے فلپائن میں بھی ملاقات کی ہے، جس میں ٹرمپ نے مودی کو اپنا دوست قرار دیا۔ برسراقتدار آنے کے بعد سے ہی ڈونلڈ ٹرمپ کا بھارت کی جانب جھکاؤ دنیا کے سامنے ہے۔ امریکی صدر مسلسل کوشش کر رہے ہیں کہ بھارت کے ساتھ مضبوط اقتصادی اور فوجی تعاون بڑھایا جائے۔ یہی وجہ ہے کہ ٹرمپ نے فلپائن میں بھی بھارتی وزیراعظم کے ساتھ ملاقات کی ہے۔ گزشتہ 5 ماہ کے دوران ان دونوں کی یہ دوسری ملاقات ہے۔امریکی صدر اور بھارتی وزیراعظم کی یہ ملاقات دارالحکومت منیلا میں آسیان اجلاس کے موقع پر ہوئی۔ ملاقات کے دوران ٹرمپ نے کہا کہ مودی ہمارے دوستوں میں شامل ہوچکے ہیں۔ جب کہ مودی کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے تعلقات تیزی سے پروان چڑھ رہے ہیں۔ مودی نے ٹرمپ سے کہا کہ دونوں ملک باہمی تعلقات سے آگے جا سکتے ہیں اور ایشیا کے مستقبل اور انسانیت کی فلاح کے لیے مل کر کام کر سکتے ہیں۔ انہوں نے یہ یقین دہانی بھی کرائی کہ بھارت امریکا اور دنیا کی توقعات پر پورا اترنے کی کوشش کرے گا۔ امریکی صدر ویتنام میں ہونے والے ایپک اجلاس کے دوران انڈو پیسفیک کی اصطلاح بھی استعمال کرچکے ہیں اوراپنے خطاب میں بحرالکاہل کے ممالک اور بھارت کے اتحاد پر زور دینا ٹرمپ کی بھارت نوازی کا پتا دیتا ہے۔ دوسری جانب ٹرمپ نے اپنے فلپائنی ہم منصب روڈریگو ڈوٹیرٹے سے بھی ملاقات کی۔ ملاقات کے بعد ٹرمپ نے کہا ہے کہ ان کے مابین بہترین تعلقات ہیں۔ دونوں رہنماؤں کے مابین یہ ملاقات فلپائن ہی میں جاری آسیان سمٹ کے موقع پر ہوئی۔ فلپائن میں انسداد منشیات کی کارروائیوں میں انسانی حقوق کی مبینہ خلاف ورزیوں کے تناظر میں ٹرمپ پر کافی دباؤ تھا کہ وہ فلپائنی ہم منصب کے ساتھ اپنی ملاقات میں یہ معاملہ اٹھائیں اور سخت موقف اختیار کریں۔ تاہم ڈوٹیرٹے پچھلے ہفتے ہی یہ بیان دے چکے ہیں کہ اگر ٹرمپ نے ان سے اس موضوع پر بات کی، تو وہ ان سے کہیں گے کہ وہ اس معاملے سے دور رہیں۔ وائٹ ہاؤس کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ٹرمپ نے ڈوٹیرٹے اس معاملے پر بات کی ہے۔ دونوں رہنما کافی متنازع بیانات دنے کے لیے عالمی سطح پر معروف ہیں۔ادھر ٹرمپ کی آمد پر فلپائن کے عوام بالکل بھی خوش نہیں ہیں۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی آمد پر منیلا میں ہزاروں افراد نے احتجاج کیا۔ یہ مظاہرہ اس وقت پُرتشدد صورت اختیار کرگیا، جب پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے لاٹھیاں اور پانی برسانا شروع کردیا۔مظاہرین ’نو وار نو ٹرمپ‘ اور ’بین ٹرمپ‘ کے نعرے لگا رہے تھے۔

حصہ