اسرائیلی فوج کا مسجد اقصیٰ پر دھاوا ،نمازی بے دخل

115
مقبوضہ بیت المقدس: مسجداقصیٰ سے بے دخل کیے گئے نمازی دروازے پر دھرنا دیے ہوئے ہیں
مقبوضہ بیت المقدس: مسجداقصیٰ سے بے دخل کیے گئے نمازی دروازے پر دھرنا دیے ہوئے ہیں

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) اسرائیلی فوج نے مسجد اقصیٰ میں گھس کر نمازیوں اور روزہ داروں کے خلاف ایک بار پھر وحشیانہ کارروائی کی اور انہیں قبلہ اول سے بے دخل کر دیا۔ فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق منگل اور بدھ کی درمیانی شب قابض فوج نے مسجد اقصیٰ میں معتکف درجنوں فلسطینیوں کو بندوق کے زور پر باہر نکال دیا۔ نمازیوں نے رات کھلے آسمان تلے گزاری اور انہیں سحری کے بعد مسجد میں جانے کی اجازت دی گئی۔ اسرائیلی فوج کی طرف سے قبلہ اول میں نمازیوں کے خلاف یہ کارروائی ایک ایسے وقت میں کی گئی جب دوسری جانب یہودی آبادروں کے قبلہ اول میں دھاوے جاری ہیں۔ فلسطینی ذرائع کے مطابق اسرائیلی فوج مسجد اقصیٰ میں نمازیوں کو بے دخل کرنے کی مجرمانہ پالیسی پرعمل پیرا رہتی ہے۔ صہیونی فوج نے ماہ صیام کے آخری عشرے میں مسجد اقصیٰ میں فلسطینیوں کی تعداد کم کرنے کے لیے مختلف ہتھکنڈے استعمال کررہی ہے۔ مسجد اقصیٰ میں رات کو ہزاروں فلسطینیوں نے مسجد اقصیٰ میں نماز تراویح ادا کی۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج نے مسجد اقصیٰ کو فوجی چھائونی میں تبدیل کر رکھا تھا۔ مسجد اقصیٰ اور قدیم بیت المقدس میں بڑی تعداد میں اسرائیلی فوج اور پولیس تعینات کی گئی تھی۔ اس دوران قابض فوج نے مسجد اقصیٰ پر دھاوے کے دوران سوئیڈن سے تعلق رکھنے والے ایک مسلمان نمازی کا پاسپورٹ زبردستی چھیننے کے بعد ضبط کرلیا۔