اٹلی: تعلیمی پالیسی کے خلاف  طلبہ کے ملک گیر مظاہرے

49
روم: اٹلی میں حکومتی تعلیمی پالیسی کے خلاف طلبہ کے مظاہرے کے دوران نائب وزرائے اعظم کے پتلے نذر آتش کیے جا رہے ہیں
روم: اٹلی میں حکومتی تعلیمی پالیسی کے خلاف طلبہ کے مظاہرے کے دوران نائب وزرائے اعظم کے پتلے نذر آتش کیے جا رہے ہیں

روم (انٹرنیشنل ڈیسک) اٹلی حکام کی جانب سے تعلیم کے شعبے میں اخراجات کم کرنے پر ملک بھر میں طلبہ مظاہروں کے لیے امڈ آئے۔ ملک کے 50 شہروں میں ہزاروں طلبہ نے عوامیت پسند حکومت کے خلاف مظاہرے کیے۔ دارالحکومت روم میں 3 ہزار طلبہ نے وزارت تعلیم کی عمارت کے باہر احتجاج کیا۔ مختلف شہروں میں ہونے والے مظاہروں کے دوران طلبہ نے 2 نائب وزرائے اعظم ماتیو سالوینی اور لوئگی ڈی مائیو کے پتلوں کو بھی آگ لگائی۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ اگر حکومت خوفزدہ نہیں ہے تو پھر اسے تعلیم کے شعبے میں سرمایہ کاری کرنی چاہیے۔ دوسری جانب روم حکومت کے نائب وزیراعظم ماتیو سالوینی نے پتلے جلانے اور شدید نعرہ بازی کو نامناسب قرار دیتے ہوئے مذمت کی۔
اٹلی/مظاہرے

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.