اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید فلسطینی نوجوان سپرد خاک

99
غزہ: قابض اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والیفلسطینی نوجوان کا جسد خاکی آخری آرام گاہ لے جایا جارہا ہے‘ اہل خانہ غم سے نڈھال ہیں
غزہ: قابض اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والیفلسطینی نوجوان کا جسد خاکی آخری آرام گاہ لے جایا جارہا ہے‘ اہل خانہ غم سے نڈھال ہیں

غزہ (انٹرنیشنل ڈیسک) غزہ کی سرحد پر قابض اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والے فلسطینی نوجوان کو آہوں اور سسکیوں کے ساتھ سپرد خاک کردیا گیا۔ جنازے میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ فلسطینی وزارت صحت کے مطابق اتوار کی شب مشرقی غزہ میں اسرائیلی فوج نے 21 سالہ نوجوان عماد اشتیوی کے سرمیں گولی ماری، جس کے نتیجے میں وہ موقع ہی پر شہید ہوگیا۔ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب غزہ کی سرحد پر فلسطینیوں نے ٹائر جلا رکھے تھے اور اسرائیلی فوج پر سنگ باری جاری تھی۔ واضح رہے کہ 30 مارچ سے فلسطینی شہری حق واپسی کے لیے غزہ کی سرحد پر مظاہرے کررہے ہیں۔ انہیں 1948ء کے دوران ان کے گھروں سے نکال دیا گیاتھا اور وہ پون صدی سے غزہ میں مہاجر کے طورپر زندگی گزار رہے ہیں۔ اس سے قبل جمعہ کے روز بھی اسرائیلی فوج نے مظاہرین پرحملہ کرکے ایک فلسطینی شہری کو شہید اور سیکڑوں کو زخمی کر دیا تھا، جس کے بعد حق واپسی تحریک کے دوران شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 194 تک جا پہنچی۔ اس دوران 20 ہزا472 زخمی ہو چکے ہیں، جب کہ شہدا میں 32 کم عمربچے بھی شامل ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ