بجلی کی تقسیم کے نظام میں پرائیویٹ مارکیٹ کے قیام پر غور کررہے ہیں،عمر ایوب

67

اسلام آباد (اے پی پی)وفاقی وزیر برائے پاور و پیٹرولیم عمر ایوب خان نے ملک میں بجلی کے تقسیم کار کے نظام میں ویلنگ اور بجلی کی پرائیویٹ مارکیٹ کے قیام کی نوید سنادی،پرائیویٹ بجلی کی مارکیٹ سے صارفین اور بجلی بنانے والے دونوں ہی مستفید ہو سکیں گے، ترقی یافتہ ممالک میں اس طرح کی مارکیٹس پہلے سے کام کررہی ہیں، صارف کی مرضی ہوتی ہے کہ اپنے طے شدہ ریٹ پر کسی بھی بجلی بنانے والے سے بجلی خرید سکتا ہے، پاکستان میں بجلی کی تقسیم کا موجودہ نظام حکومت کی ملکیت ہے اس کو ویلنگ کے لیے دستیاب کرنے سے بجلی کی مارکیٹ قائم کرنے میں اہم سنگ میل طے کرلیا جائے گا۔منگل کو وفاقی وزیر برائے پاور نے جاپان کے سفیر کونینوری متسوداکے ساتھ ملاقات میں پاکستان میں انرجی مارکیٹ اور ویلنگ سے متعلق آگاہ کیا۔ ملاقات میں پاکستان اور جاپان کے درمیان موجودہ تعلقات اور خاص طور پر انرجی سیکٹر میں تعاون پر اطمینان کا اظہارکیا گیا۔ ملاقات میں موجودہ تعاون کو مزید فروغ دینے پر بھی زور دیا گیا۔ عمر ایوب خان نے جاپان کے سفیر کو پاکستان کے انرجی سیکٹر سے متعلق آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی نئی قابل تجدید توانائی کی پالیسی اب بننے کے قریب ہے جس میں ملک میں اس سیکٹر میں سرمایہ کاری کے مواقع بڑھیں گے، اسی طرح سرمایہ کاری کو بھی واضح اور بہت اچھا ریٹرن ملے گا۔ وفاقی وزیر نے جاپان کے سفیر کو گردشی قرضوں کی بڑھوتری کم کرنے اور بالکل ختم کرنے کے پلان کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ ان اقدامات کی وجہ سے سرمایہ کاروں کا اعتماد بڑھا ہے۔کونینوری متسودا نے عمر ایوب خان کو سالوں بعد ملک میں رمضان کے مقدس مہینے میں بلاتعطل بجلی کی فراہمی پر مبارک باد دی۔ انہوں نے بجلی اور گیس چوری کے خلاف شروع کی گئی مہم پر بھی اطمینان کا اظہار کیا جس کی بدولت ملک کی تاریخ میں پہلی بار ریکارڈ ریونیو اور ریکوری کی جاچکی ہے۔جاپانی سفیر نے وفاقی وزیر برائے پاور و پیٹرولیم کو آگاہ کیا کہ جاپان کی مختلف کمپنیاں بشمول مْستوبشی پاکستان کے انرجی سیکٹر میں مختلف پروجیکٹ سرانجام دے رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ بہت ساری جاپانی کمپنیاں پاکستان کے انرجی سیکٹر میں دلچسپی لے رہی ہیں اوریہاں سرمایہ کاری پلان کررہی ہیں۔ جاپانی سفیر نے وفاقی وزیر کو این ٹی ڈی سی اور جے آئی سی اے(جائیکا) کے درمیان ملک کے ٹرانسمیشن ماسٹر پلان پر جاری کام کے بارے میں آگاہ کیا۔علاوہ ازیںوفاقی وزیر عمر ایوب خان نے پیپکو، تمام بجلی تقسیم کار کمپنیوں (ڈسکوز) اور این ٹی ڈی سی کو بجلی کی جنریشن، ٹرانسمیشن اور تقسیم کاری نظام کا پیک گرمیوں میں فْل لوڈ ٹیسٹ کرنے کے احکامات جاری کر دیے ہیں جس کا مقصد پورے نظام کی استعداد اور ان میں موجود تکنیکی رکارٹوں کی نشاندہی اور انکے خاتمے کے لیے مربوط پلان بنانا ہے، پیک گرمیوں کا فْل لوڈ ٹیسٹ 17جون 2019ء بروز پیرسے شروع ہوگا۔ منگل کو وفاقی وزیر بجلی عمر ایوب خان کی زیر صدارت ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں یہ احکامات جاری کیے گئے ہیں۔ اجلاس میں ایم ڈی پیپکو، ایم ڈی این ٹی ڈی سی، متعلقہ ڈسکوز کے سی ای اوز اور پاور ڈویڑن کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔