ٹیکس آمدنی کاموجودہ شارٹ فال کم ہونے کا امکان

35

کراچی(اسٹاف رپورٹر) فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) کورواں مالی سال کے اختتام 20جون2019 تک4ہزار39ارب روپے کے مقررہ ہدف کوحاصل کرنے کے لئے397ارب روپے کی پہاڑ جیسی ٹیکس آمدنی حاصل کرنی ہے۔ ٹیکس ماہرین کاکہناہے کہ اب تک ٹیکس وصولی میں ایف بی آر کی کارکردگی بدترین رہی ہے تاہم اثاثے ظاہر کرنے کی ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کے لاگو ہونے اور شبرزیدی کے ایف بی آر کے نئے چیئرمین بننے سے امید پیدا ہوئی ہے کہ 30جون 2019 تک ایف بی آر کی ٹیکس آمدنی کاموجودہ شارٹ فال کافی حد تک کم ہوجائے گا اور اگرایف بی آر ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کی بیساکھیوں پرٹیکس آمدنی وصولی کے مقررہ ہدف سے300 ارب روپے پیچھے بھی رہ گیا تو یہ ایک معجزہ ہوگا۔ ٹیکس ماہرین کاکہناہے کہ 30جون2019 تک ایف بی آر کے پاس ڈیڑھ ماہ کاعصرہ رہ گیا ہے۔ گزشتہ مالی سال کے آخری 2ماہ‘ مئی اورجون2018 میں ایف بی آر نے سرتوڑ کوشش سے919ارب روپے وصول کئے تھے۔ اوراگرایف بی آر نے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کی مدد سے گیارہ سوارب روپے وصول کرلئے تو حکومت کے مالیاتی منیجرز سکھ کا سانس لے سکیں گے تاہم مئی2019کے ٹیکس وصول کے اعدادوشمار آنے سے صورتحال کاصحیح تجزیہ کیاجاسکے۔