کان کنی سے وابستہ مزدوروںکے بچوںکومفت تعلیم دیںگے‘مرتضیٰ بلوچ

17

کراچی ( اسٹاف رپورٹر)صوبائی وزیر برائے محنت اور افرادی قوت غلام مرتضیٰ بلوچ نے کہا ہے کہ محکمہ محنت سندھ نے کان کنی سے وابستہ ورکرز اور ان کے خاندانوں کو مفت تعلیم، اسکول بیگز، جوتے اورکورس کی کتابیں فراہم کرنے کے لیے متعدد اقدامات کیے ہیں اور یہ سہولیات ان کے کام کرنے کی جگہوں پر فراہم کی جارہی ہیں جبکہ سکھر اور خیر پور کے اضلاع میں کان کنی سے وابستہ ورکرز کے لیے قائم ڈسپنسریوں کو اپ گریڈ کر کے دس بستروں کے اسپتالوں میں تبدیل کیا جارہا ہے۔ یہ بات انہوں نے اپنے دفتر میں مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ آجروں کی آن لائن رجسٹریشن سندھ بزنس رجسٹریشن پورٹیل کے ذریعے شروع کردی گئی ہے۔ صوبائی وزیر برائے محنت اور افرادی قوت غلام مرتضیٰ بلوچ نے کہا کہ سیسی کے زیر اہتمام اسپتالوں اور ڈسپینسریوں کی بحالی کا کام جاری ہے اور محکمہ محنت سندھ کی کوشش ہے کہ ان ہسپتالوں اور ڈسپینسریوں میں مشہور زمانہ ادویات کی کمپنیوں کی ادویات فراہم کی جائیں تاکہ مزدوروں اور ان کے خاندانوں کو اعلیٰ معیار کی صحت کی سہولیات دستیاب ہوں۔