شوروم مالکان نے گاڑیاں گھروں کے سامنے پارک کرنا شروع کردیں

376
خالد بن ولید روڈ: کارشوروم مالکان نے غیر قانونی پارکنگ ختم کرکے ملحقہ گلیوں میں گھر وں کے سامنے گاڑیاں پارک کررکھی ہیں،گاڑیوں کی دھلائی، اس سے پیدا ہونے والے کیچڑ اور گھروں کاراستہ بند ہونے کی وجہ سے علاقہ مکینوں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے(فوٹو جسارت)
خالد بن ولید روڈ: کارشوروم مالکان نے غیر قانونی پارکنگ ختم کرکے ملحقہ گلیوں میں گھر وں کے سامنے گاڑیاں پارک کررکھی ہیں،گاڑیوں کی دھلائی، اس سے پیدا ہونے والے کیچڑ اور گھروں کاراستہ بند ہونے کی وجہ سے علاقہ مکینوں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے(فوٹو جسارت)

کراچی (رپورٹ /محمد علی فاروق )طارق روڈ کے علاقے خالد بن ولید روڈ پرکار شوروم مالکان نے سڑکوں پر گاڑیوں کو پارک کرنے پر پابندی کے بعد اپنی گاڑیوں کو محلے کی گلیوں میں کھڑا کرنا شروع کردیا جس کی وجہ سے متعلقہ علاقوں کے رہائشی شدید اذیت اور پریشانی کا شکار ہوگئے ہیں ۔گھروں کے سامنے گاڑیاں ہونے کی وجہ سے اہل علاقہ کو آمد و رفت میں شدید پریشانی کا سامنا ہے جبکہ خواتین کا گھروں سے نکلنا بھی محال ہوگیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ نے گزشتہ دنوں خالد بن ولید روڈ پر ٹریفک جام کی صورت حال کو پیش نظر رکھتے ہوئے انتظامیہ کو ہدایت کی تھی کہ کار شوروم مالکان کی جانب سے اس اہم شارع پر گاڑیوں کو پارک کرنے کا سلسلہ ختم کرایا جائے۔ وزیراعلیٰ سندھ کے احکامات کے بعد مقامی انتظامیہ نے ان پر سختی سے عملدرآمد کرایا اور خالد بن ولیڈ روڈ سے گاڑیوں کی پارکنگ کا سلسلہ ختم کردیا گیا تاہم اب شوروم مالکان نے اپنی گاڑیوں کو ملحقہ علاقوں کی گلیوں میں کھڑا کرنا شروع کردیا ہے جس سے نئے مسائل نے جنم لیا ہے ۔اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ آج کل ان کی گلیاں گاڑیوں کی مارکیٹ کا نقشہ پیش کررہی ہیں اور کوئی گھر ایسا نہیں ہے جس کے سامنے گاڑیاں پارک نہیں کی گئی ہوں ۔شوروم مالکان گاڑیوں کو ان کے گھروں کے سامنے ہی دھلواتے ہیں جس گلیوں میں کیچڑ ہوگئی ہے جبکہ آمد و رفت میں شدید مشکلات سے سامنا ہے ۔اس ضمن میں کارشوروم مالکان کا کہنا ہے کہ خالد بن ولید روڈ کا شمار کراچی میں گاڑیوں کی خرید و فروخت کی بڑی مارکیٹوں میں ہوتا ہے ۔یہاں سے حکومت کو کروڑوں روپے کا ریونیو حاصل ہوتا ہے جبکہ سیکڑوں لوگوں کا روزگار بھی ان ہی شورومز سے وابستہ ہے ۔انتظامیہ نے ہمیں کہا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ کے احکامات ہیں کہ فوری طور پر یہاں پر گاڑیاں کھڑی کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے ہم نے احکامات کی پابندی کرتے ہوئے اپنی گاڑیاں یہاں سے ہٹالی ہیں ۔اہل علاقہ کو درپیش مشکلات کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ہم اپنا کاروبار تو بند نہیں کرسکتے ہیں ۔یہ حکومت کی ذمے داری ہے کہ وہ ہمیں کوئی ایسا جگہ فراہم کرے جہاں پر گاڑیوں پر کھڑا کیا جاسکے ۔ہمیں شہریوں کی مشکلات کا اندازہ ہے ۔حکومت کو بھی چاہیے وہ اس سلسلے میں ہم سے بات کرے ۔ہم نیک نیتی کے ساتھ اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے تیار ہیں ۔