جتنی سازشیں کرلیں پی پی سے سندھ نہیں چھین سکتے ،بلاول زرداری

167
کراچی: پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری بے نظیر بھٹو پارک میں پودا لگانے کے بعد دعا مانگ رہے ہیں
کراچی: پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری بے نظیر بھٹو پارک میں پودا لگانے کے بعد دعا مانگ رہے ہیں

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری نے کہا ہے کہ وفاقی کابینہ کے 3وزرا کا رابطہ کالعدم تنظیموں کے ساتھ ہے،حکومت ہوش کے ناخن لے، حکومت عوام کی مدد کے بجائے ان کا معاشی قتل کررہی ہے، عوام مہنگائی کے سونامی میں ڈوب رہے ہیں،حکومت پہلے انسان بنے پھرحکمران، عوام پس رہے ہیں، جووزیرکہہ رہے ہیں معیشت ترقی کررہی ہے وہ مستعفی ہوجائیں۔بلاول کا کہنا تھا دھاندلی کے باوجود جوہم سے سندھ نہیں چھین سکے تواب سازش کررہے ہیں،تمام غیر جمہوری کوششوں کو ناکام بنائیں گے،کیس کو سندھ سے راولپنڈی منتقل کرنا قانون کی خلاف ورزی ہے۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے شہید بینظیربھٹو پارک بوٹ بیسن میں سرسبزسندھ شجرکاری پروگرام کے تحت پودا لگانے کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پروزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ صوبائی وزیرسید ناصرحسین شاہ، صوبائی وزیرسعید غنی،وقارمہدی، راشد ربانی پیپلزپارٹی سندھ کے صدر نثارکھوڑو دیگربھی موجود تھے۔بلاول نے کہا کہ 3 وفاقی وزرا کے کالعدم تنظیموں سے رابطے ہیں اور ان وزرا کی مخصوص کالعدم تنظیموں کے لیے وڈیوز وائرل ہوئی ہیں جبکہ ایک وزیر کالعدم تنظیم سے کہتا ہے جب تک ہماری حکومت ہے آپ کیخلاف کارروائی نہیں کریں گے، ان وزرا کی کابینہ میں شمولیت پر ہم کہیں گے ہمیں حکومت کی نیت پر شک ہے، اس قسم کے لوگوں کو نئے پاکستان کی کابینہ میں نہیں ہونا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ کالعدم تنظیموں کے خلاف کارروائی اپوزیشن جماعتوں کا مطالبہ ہے،حکومت ہوش کے ناخن لے اور نیشنل ایکشن پلان پر پوری طرح عمل کرے۔ حکومت کی طرف سے بچگانہ بیانات آرہے ہیں، وفاقی وزرا کے بیانات افسوسناک اور شرمناک ہیں، حکومت کو پہلے انسان پھر حکمران بننا چاہیے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ سوال اٹھانے والوں پر تنقید کرنا مودی پالیسی ہے اور یہ پالیسی پی ٹی آئی حکومت چلا رہی ہے مودی اور ان کی پالیسی میں کوئی فرق نہیں ہے، تنقید کرنے والوں کو ملک دشمن قرار دے دیا جاتا ہے ہم نے پہلے بھی غیر جمہوری سازشوں کو ناکام بنایا ،آج بھی بنائیں گے۔بلاول کا مزید کہنا تھا کہ ہم جعلی اور جھوٹی جے آئی ٹی کو نہیں مانتے، عدالت عظمیٰ نے بھی کہا میں بیگناہ ہوں، کسی کے کہنے پر میرا نام ڈالاگیا، عدالت عظمیٰ نے بھی کہا بلاول کا نام نکالا جائے ۔عدالت نے نام نکالنے کا کہا لیکن معلوم نہیں اب تک نام کیوں نہیں نکالا گیا۔ انہوں نے کہا کہ جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کو راولپنڈی منتقل کرنا بنیادی حقوق کی خلاف ورزی غیر آئینی اور غیر جمہوری قرار دیا۔انہوں نے کہا کہ غریبوں کو مدد دینے کے بجائے ان کامعاشی قتل کیا جارہاہے،انہوں نے بجلی اور گیس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کو عوام کا معاشی قتل عام قرار دیا اورکہاکہ حکومت کو پہلے انسان پھرحکمران بننا چاہیے جووزیر کہہ رہے ہیں معیشت ترقی کررہی ہے وہ مستعفی ہوجائیں۔انہوں نے کہاکہ سرسزسندھ مہم آج سے شروع کردی ہے، بہت خوش ہوں، ماحولیات کو بہتر کرنا بہت ضروری ہے، آصف زرداری کے وژن کے مطابق کام کررہے ہیں۔ انہوں نے ایک آدمی ایک درخت کی مہم چلائی تھی۔ان کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت نے درخت لگانے میں 3 بار گنیزبک آف ورلڈ ریکارڈ توڑا، پارکس، دریاؤں سمیت مختلف علاقوں میں پودے لگائیں گے، کوشش ہے زیادہ سے زیادہ پھل کے درخت لگائیں، سندھ حکومت اور محکمہ وائلڈلائف نے اچھا کام کیا۔ انہوں نے مزید کہا بھارت آبی دہشت گردی کرکے پاکستان کا پانی روکتا ہے، جب تک ہم ارسا کو صحیح نہیں کریں گے اس وقت تک بھارت کو کیسے جواب دوں، پانی کے معاملے کو عالمی سطح پر اٹھائیں گے، سندھ میں سیاسی انجینئرنگ کی کوششیں چل رہی ہیں جودھاندلی کے باوجود ہم سے سندھ نہیں چھین سکے تواب سازش کررہے ہیں، تمام غیر جمہوری کوششوں کو ناکام بنائیں گے، کیس کو سندھ سے راولپنڈی منتقل کرنا قانون کی خلاف ورزی ہے، کیس تو راولپنڈی جارہا ہے، میں سمجھتاہوں فیصلہ پہلے سے لیا گیا ہے۔صحافی کے سوال پر چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا شادی سے متعلق سوال کاجواب پریس کانفرنس میں نہیں دوں گا، اگر شادی کاجواب ابھی دیا تو یہ پوری پریس کانفرنس اسی میں ختم ہوجائے گی۔قبل ازیں صوبائی وزیرسید ناصرحسین شاہ نے بلاول بھٹو کوبتایا کہ سرسبز سندھ کے تحت 5 سال میں صوبہ بھر میں 2 ارب پودے لگائیں جائیں گے۔