ماربل انڈسٹری پر توجہ سے اربوں ڈالر کا زرمبادلہ حاصل کیا جا سکتا ہے۔ شیخ عامر وحید 

210

اسلام آباد: اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شیخ عامر وحید نے کہا کہ اگر حکومت تعاون کرے تو ماربل انڈسٹری ماربل و گرئنائٹ مصنوعات کی برآمدات کو فروغ دے کر اربوں ڈالر کا زرمبادلہ ملک میں لا سکتی ہے کیونکہ اس انڈسٹری میں ترقی کرنے کی بے شمار صلاحیت موجود ہے لہذا انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ ماربل صنعت کی ترقی پر خصوصی توجہ دے جس سے معیشت تیزی سے بہتری کی طرف گامزن ہو گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے آل پاکستان ماربل انڈسٹریز ایسوسی ایشن کے نومنتخب عہدیداران کی تقریب حلف برداری کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ میاں گلزار احمد نے بطور چیئرمین، محمد بلال خان نے سینئر وائس چیئرمین اور شیخ افتخار نے بطور وائس چیئرمین آل پاکستان ماربل انڈسٹریز ایسوسی ایشن کے اپنے عہدوں کا حلف لیا۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شیخ عامر وحید نے نومنتخب عہدیداران سے حلف لیا۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر محمد نوید ملک، نائب صدر نثار مرزا، محمد شکیل منیر,سلیم مغل، فرخ مجید، خالدمیاں اور دیگر بھی اس موقع پر موجود تھے۔
شیخ عامر وحید نے کہا کہ ماربل و گرینائٹ کی عالمی مارکیٹ تقریبا 62ارب ڈالر پر مشتمل ہے لیکن اس میں پاکستان کا حصہ ایک فیصد سے بھی کم ہے جس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ پاکستان ماربل کی عالمی مارکیٹ میں اپنا حصہ بڑھا کر کئی گنا بہتر نتائج حاصل کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ابھی تک ماربل و گرینائٹ نکالنے کیلئے پرانی ٹیکنالوجی پر انحصار کر رہا ہے جس وجہ سے ہمارا تقریبا 73فیصد پتھر ضائع ہو جاتا ہے جو ملک کیلئے بہت نقصان دہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ماربل انڈسٹری میں جدید ٹیکنالوجی متعارف کرانے میں حکومت تعاون کرے تو یہ انڈسٹری ماربل مصنوعات کی برآمدات بڑھا کر ملک کیلئے اربوں ڈالر کا زرمبادلہ کما سکتی ہے۔
شیخ عامر وحید نے کہا کہ بلوچستان اور خیبر پختونخواہ سمیت پاکستان کے تمام صوبوں میں ماربل و گرینائٹ کے وسیع ذخائر پائے جاتے ہیں لہذا جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کر کے اور ماربل مصنوعات کی ویلیو ایڈیشن کر کے برآمدات کو تیزی سے فروغ دیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین پاکستان سے خام ماربل درآمد کرتا ہے اور اس کی ویلیو ایڈیشن کر کے کئی گنا زیادہ منافع حاصل کرتا ہے لہذا ضرورت اس بات کی ہے کہ حکومت ماربل صنعت کی جدید مشینری و ٹیکنالوجی کی درآمد پر تمام ٹیکسوں و ڈیوٹیز کا خاتمہ کرے تا کہ نجی شعبہ نئی مشینری و ٹیکنالوجی حاصل کر کے ماربل صنعت کو بہتر خطوط پر ترقی دے سکے جس سے نہ صرف اس انڈسٹری کو بہتر ترقی ملے گی بلکہ پاکستان اربوں ڈالر کی ماربل و گرینائٹ مصنوعات کو برآمد کرنے کے قابل ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سی پیک منصوبے کے تحت چین کے ساتھ مل کر ملک میں ماربل انڈسٹریل پارک بنائے جس سے ماربل صنعت کو تیزی سے فروغ ملے گا۔
آل پاکستان ماربل انڈسٹریز ایسوسی ایشن کے نو منتخب چیئرمین میاں گلزار احمد، سینئر وائس چیئرمین محمد بلال خان اور نائب چیئرمین شیخ افتخار نے اپنے خطاب میں اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ ماربل شعبے سے وابستہ صنعتکاروں کے مفادات کے تحفظ کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے اور اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ساتھ مل کر ان کے اہم مسائل کو حل کرانے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے اس موقع پر چیمبر کے عہدیداران کا حلف برداری کی تقریب میں شرکت کرنے پر شکریہ ادا کیا اور مشترکہ مفادات کے فروغ کیلئے ان کے ساتھ مل کر کام کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ
mm
قاضی جاوید سینئر کامرس ریپورٹر اور کامرس تجزیہ، تفتیشی، اور تجارتی و صنعتی،معاشی تبصرہ نگار کی حیثیت سے کام کرنے کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں ۔جسارت کے علاوہ نوائے وقت میں ایوان وقت ،اور ایوان کامرس بھی کرتے رہے ہیں ۔ تکبیر،چینل5اور جرءات کراچی میں بھی کامرس رپورٹر اور ریڈیو پاکستان کراچی سے بھی تجارتی،صنعتی اور معاشی تجزیہ کر تے ہیں qazijavaid61@gmail.com