راولپنڈی، خشک میوہ جات کی قیمتوں میں اضافے سے پریشان عوام پھٹ پڑے

29

راولپنڈی (بی این پی) پنجاب حکومت کی ناقص پالیسیوں کے باعث جگہ جگہ خشک میوہ جات فروخت کرنے والوں نے تجاوزات کھڑی کردیں، جس سے عوام کی مشکلات میں اضافہ ، ٹریفک کے بہاؤ میں بھی شدید خلل پیدا ہورہا ہے جبکہ حکومت ان کے خلاف کارروائی کرنے میں مکمل ناکام، خشک میوہ جات کی قیمتوں میں بھی استحکام لانے میں اپنا کردار ادا نہیں کرسکی اور شہری اس کا خمیازہ بھگتنے پر مجبور ہیں۔ دکانداروں نے اپنی دکانوں کو تو چمکا لیا ہے اور اس کی کسر وہ چیزوں کی قیمتیں بڑھا کر عوام سے پوری کررہے ہیں۔ سردیوں کی آمد کے ساتھ ہی خشک میوہ جات کی فروخت میں یک دم اضافہ ہوجاتا ہے اور عوام کی بڑی تعداد خشک میوہ جات کی خریداری میں مصروف ہوجاتی ہے۔ خشک میوہ جس میں مونگ پھلی، چلغوزے، بادام، ریوڑی شامل ہیں عوام کی پسندیدہ چیزیں ہیں اور سردیوں کے موسم میں ان کی فروخت میں ریکارڈ اضافہ ہوجاتا ہے۔ بی این پی کے زیر اہتمام سروے میں ڈرائی فروٹ کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے سے پریشان عوام پھٹ پڑے اور شکایات کے انبار لگا دیے۔ اس حوالے سے شہریوں اویس اورعمیر نے کہا کہ حکومت سڑکیں تو بہت شوق سے کروڑوں روپے خرچ کرکے بنوارہی ہے مگر عوام کا بھی ان کو خیال کرنا چاہیے اس وقت مہنگائی سب سے بڑا جن ہے جس کو حکومت نے کھلا چھوڑا ہوا ہے ہر چیز کی قیمت آسمان سے باتیں کررہی ہے، ہم یہاں بازار میں خشک میوہ جات خریدنے آئے ہیں مگر چیزوں کی قیمتیں سن کر خالی ہاتھ ہی واپس جانے پر مجبور ہیں۔ شکیلہ اور سعدیہ نے کہا کہ ڈرائی فروخت ہمیں بہت پسند ہے اور سردیوں میں کھانے کا مزا بھی ہے مگر ان کی قیمتیں بہت زیادہ ہیں، حکومت کو چاہیے کہ اس پر توجہ دے۔ سدرہ، ماہ نور اور بشریٰ نے کہا کہ خشک میوہ جات کی قیمت اتنی زیادہ ہوگئی ہے کہ اب ہم پہلے سے کم کھانے پر مجبور ہوگئے ہیں، حکومت عوام کو کوئی ریلیف نہیں دے رہی وہ صرف اپنے مسائل میں پھنسی ہوئی ہے، ان کو عوام کی کوئی پرواہ نہیں۔ عوامی حلقوں نے مطالبہ کیا کہ خشک میوہ جات پر عائد ٹیکس کم کیا جائے تاکہ غریب عوام بھی سردیوں میں اس نعمت سے لطف اندوز ہوسکیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ