اندرون اسندھ، دھرنے اور مظاہرے ، کاروبار مکمل بند

41
حیدر آباد: عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے تحت آسیہ مسیح کی رہائی کیخلاف احتجاجی ریلی نکالی جارہی ہے
حیدر آباد: عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے تحت آسیہ مسیح کی رہائی کیخلاف احتجاجی ریلی نکالی جارہی ہے

 

حیدر آباد، بھٹ شاہ، میرپور خاص، ٹنڈو جام، شکارپور، سجاول، ماتلی، ڈہرکی، ٹنڈو محمد خان، چوہڑ جمالی، جیکب آباد، ٹنڈو آدم (نمائندگان جسارت) ملعونہ آسیہ کی رہائی کے عدالتی فیصلے کیخلاف سندھ بھر میں دھرنے، مظاہرے، ریلیاں اور مساجد میں قرار دادیں منظور کی گئیں۔ حیدر آباد ایک بڑا احتجاجی مظاہرہ دفترجماعت اسلامی اسٹیشن روڈ پر کیا گیا۔ بعد ازاں مظاہرین نے ریلی کی صورت میں پریس کلب تک مارچ کیا۔ جماعت اسلامی سندھ کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری عبدالوحید قریشی نے کہا کہ ملعونہ آسیہ کی رہائی میں عدلیہ اور حکومت مجرم ہے۔ ثاقب نثار کے فیصلے اور عمران خان کے اقدام کی بھرپور مذمت کرتے ہیں، فیصلہ واپس نہ لیا گیا تو پورا ملک سڑکوں پر ہوگا۔ میرپورخاص میں بھی ملعونہ آسیہ کی رہائی کے حکم پر مذہبی جماعتوں کا احتجاج مارکیٹ چوک پر جاری رہا۔ اس موقع پر جے یوآ ئی کے ضلعی امیر مولاناحفیظ الرحمن، مفتی شریف سعیدی، جماعت اسلامی کے نورالٰہی مغل، افضال احمد، عزیز الرحمن، مولانا حافظ اکبر راشد سمیت دیگر نے کہا کہ جبکہ تک ملعونہ آسیہ کو پھانسی نہیں دی جاتی ہے ہمارا احتجاج جاری رہے گا اس سے قبل شہر کی تمام مساجد میں بھی ملعونہ آسیہ کی رہائی کیخلاف قراردادیں منظور کی گئی اور عدالتی فیصلے کی مذمت کی گئی۔ ٹنڈوجام میں بھی مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال، ہزاروں افراد کی ریلی اور دھرنا۔ ہزاروں افراد نے عبدالستار ایدھی چوک سے ریلی نکالی جو کہ مختلف شاہراہوں سے ہوتی ہوئی پریس کلب کے سامنے میرپور خاص حیدر آباد روڈ پر پہنچی جہاں ہزاروں افراد نے روڈ بند کر کے دھرنا دیا۔ شکار پور میں بھی مختلف مذہبی جماعتوں کی جانب سے آسیہ مسیحی کی رہائی کیخلاف احتجاجی مظاہرے اور دھرنا، روڈ بلاک۔مظاہرین کی جانب سے فیصلے پر نظر ثانی کرکے پھانسی کی سزا برقرار رکھنے کا مطالبہ۔ سجاول میں بھی آسیہ مسیح کیس کے فیصلے کے ردعمل میں مذہبی جماعتوں کی جانب سے شدید احتجاج کیا گیا اور مکمل شٹر بند ہڑتال کی گئی۔ جے یو آئی کے ضلعی امیر مولانا محمد صالح اللہ داد، مولانا مفتی نذیر عمرانی، مولانا غلام حسین، جماعت اہلسنت کے رہنما حافظ غلام مصطفی قادری، اہلسنت والجماعت کے رہنما الیاس فاروقی نے اور دیگر رہنماؤں نے اپنے خطاب میں آسیہ مسیح کی پھانسی کا مطالبہ کیا۔ ضلع بدین کے دیگر شہروں کی طرح تعلقہ ہیڈ کوارٹر ماتلی میں بھی آسیہ مسیح کی سزا منسوخ ہونے پر مختلف مذہبی، سماجی تنظیموں کے قائدین اور کارکنوں سمیت مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد اور عام شہریوں نے احتجاجی جلوس میں بہت بڑی تعداد میں شرکت کی۔ تاجر برادری نے بھی بھرپور طریقے سے ریلی میں شرکت کی، احتجاج کی کال پر تمام کاروباری مراکز اور دکانیں بند رہیں۔ ڈھرکی میں آسیہ مسیح کی بریت کے فیصلے کیخلاف جماعت اسلامی ضلع گھوٹکی کا ضلع بھر میں احتجاج۔ جماعت اسلامی ڈھرکی کی جانب سے پر امن احتجاجی ریلی نکالی گئی جس کی قیادت پروفیسر تشکیل احمد صدیقی امیر جماعت اسلامی، عبدالجبار آرائیں امیر ڈھرکی، محمد ذیشان انقلابی صدر الخدمت فاؤنڈیشن گھوٹکی، مولانا نورہان الدین خان، مولانا عبدالرشید لاشاری و دیگر رہنماؤں نے کی۔ رہنماؤں نے کہا کہ گستاخ رسول آسیہ کی رہائی کا متنازع فیصلہ فوری طور پر معطل کر کے اس کو فوری گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے، بصورت دیگر عاشقان رسول فیصلے کی معطلی تک سراپا احتجاج رہیں گے۔ ٹنڈو محمد خان میں جمعیت علمائے اسلام، تحریک لبیک پاکستان کی اپیل پر عدالت عظمیٰ کے فیصلے کیخلاف مکمل شٹربند ہڑتال رہی، جبکہ اسٹیشن روڈ سے ایک ریلی نکالی گئی جس میں ہر مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ چوہڑ جمالی میں بھی جمعیت علما اسلام اور جمعیت طلبہ اسلام کی طرف سے محمدی مسجد سے مدنی چوک تک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرین نے سخت نعریبازی کر کے پتلے نذر آتش کیے۔ جیکب آباد میں جماعت اسلامی کی جانب سے گستاخ آسیہ مسیح کی رہائی کیخلاف ضلعی امیر دیدار لاشاری، محمد حنیف کھوسہ اور محمد صالح کی قیادت میں دفتر جماعت اسلامی سے اور جے یو آئی کے حافظ میر محمد بنگلانی، مولاا فدا احمد ڈول، حافظ نصر اللہ کی قیادت میں مدرسہ قاسم العلوم سے ایک زبردست احتجاجی جلوس نکالا گیا۔ مظاہرین ڈی سی چوک پر دھرنا دے کر بیٹھ گئے جس کے باعث روڈ بلاک اور ٹریفک معطل ہوگئی۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے قوم کی دل آزاری ہوئی ہے، آسیہ مسیح کا کیس ری اوپن کیاجائے ۔

 

Print Friendly, PDF & Email
حصہ