ایچ ڈی اے شدید انتظا می اور مالیاتی بحران میں مبتلا ہوچکا ہے

50

حیدر آباد (نمائندہ جسارت) ایچ ڈ ی اے ایمپلا ئز یو نین کی جا نب سے واسا ملازمین کی چار ما ہ کی تنخواہیں، پنشن اور دیگر واجبات کی ادائیگی کے لیے دسویں روز بھی پر یس کلب حیدرآباد کے سامنے احتجاجی دھر نا جاری رہا جس میں ایچ ڈ ی اے ملازمین کی بڑ ی تعداد نے شرکت کی اور ایچ ڈی اے انتظامیہ سمیت سی بی اے یونین کے خلاف سخت نعرے بازی کی۔ اس موقع پر ایچ ڈ ی اے ایمپلائز یونین کے رہنماؤں اعجاز حسین، راجا خان پالاری، رحیم کھوسو، بلاول ملاح، عبدالقیوم بھٹی اور دیگر رہنماؤں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایچ ڈی اے انتظامیہ عیاشیاں کررہی ہے جبکہ غریب ملازمین اور اْن کے بچے دو وقت کی روٹی کو بھی ترس رہے ہیں جبکہ حکومت سندھ نے ایچ ڈی اے واسا کے ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن کی ادائیگی کے لیے پانچ کروڑ روپے کی رقم ادا کرنے کا حکم جاری کیا ہے لیکن یہ رقم نا کافی ہے۔ ایچ ڈی اے کا ادارہ حکومت سندھ کی عدم دلچسپی کی وجہ سے شدید انتظا می اور مالیاتی بحران میں مبتلا ہوچکا ہے۔ لہٰذا ہم وزیر اعلیٰ سندھ اور وزیر بلدیات سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ایچ ڈی اے شعبہ واسا کے ملازمین کی تنخواہ اور پنشن سمیت دیگر واجبات کی ادائیگی جلد سے جلد کروائیں۔ بصورت دیگر احتجاج کا دائرہ وسیع کیا جائے گا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ