ہر ماہ پیٹرول اور گیس میں اضافہ حکومت کا معمول بن گیا ہے، شکیل شیخ

26

حیدر آباد (اسٹاف رپورٹر) نیشنل لیبر فیڈریشن سندھ کے جنرل سیکرٹری شکیل احمد شیخ، انفارمیشن سیکرٹری محمد احسن شیخ نے حکومت کی جانب سے پیش بجٹ غریب دشمن بجٹ قرار دیا، ضرورت کی تمام اشیاء تیل، گھی، چینی اور دیگر اشیاء جو غریب عوام اور محنت کش استعمال کرتے ہیں پر براہ راست اور بل واسطہ ٹیکس عائد کیے گئے، ملک پہلے ہی حکومت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی کے سیلاب میں ڈوبا ہوا ہے، ہر ماہ پیٹرول اور گیس میں اضافہ حکومت کا معمول بن گیا ہے، محنت کشوں کی بنیادی تنخواہ میں اضافہ نہ کر کے حکومت نے مزدور دشمنی کا مظاہرہ کیا ہے، EOBI کی پنشن میں جو اضافہ دیا گیا ہے وہ پاکستان کی اب تک کی تاریخ میں سب سے کم اضافہ ہے، سرکاری ملازمین کی تنخواہ میں 10 فیصد اضافہ اور پنشن میں 10 فیصد اضافہ نا کافی ہے، مہنگائی میں روز اضافہ کیا جا رہا ہے لیکن سرکاری ملازمین کی تنخواہیں اور پنشن میں اضافہ ایک سال کے بعد کیا گیا ہے وہ بھی غیر تسلی بخش جبکہ محنت کش اس سے بھی محروم ہیں۔ انہوں نے بجٹ کو مسترد کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہ میں کم از کم 10 ہزار روپے کا اضافہ کیا جائے اور ریٹائر ملازمین کی پنشن میں کم از کم 25 فیصد اضافہ کیا جائے، کم سے کم اجرت 30 ہزار روپے کی جائے اور EOBI کی کم سے کم پنشن 15 ہزار روپے مقرر کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی اقتصادی پالیسیاں ناکام ہوچکی ہیں اور ملک کو IMF اور ورلڈ بینک کے قرضوں تلے دبا دیا گیا ہے، بجٹ IMF کا تیار کردہ ہے، محنت کش نہ صرف بجٹ کو مسترد بلکہ اسے واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہیں۔