خود کار میٹر لارہے ہیں،جو بل دے گا اسے ہی بجلی ملے گی،عمر ایوب

202

اسلام آباد (اے پی پی) وفاقی وزیر بجلی و پیٹرولیم عمر ایوب خان نے کہا ہے کہ لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کا کریڈٹ (ن) لیگ کو نہیں جاتا، سابق حکومت تو کہہ گئی تھی کہ لوڈ شیڈنگ جانے اور آنے والی حکومت جانے، ملک بھر میں سحر و افطار کے وقت کوئی لوڈ شیڈنگ نہیں ہو رہی، 31 دسمبر 2020ء تک گردشی قرضوں کا مکمل خاتمہ کر دیں گے، بجلی چوروں سے کوئی رعایت نہیں ہو گی، اگلے سال جون تک بجلی چوروں سے 200 ارب روپے اور نادہندگان سے 100 ارب روپے کی وصولی کریں گے، 2030ء تک 30 فیصد انرجی مکس کو قابل تجدید توانائی پر منتقل کر دیا جائے گا، ملک بھر میں آٹومیٹک میٹر کا نظام لایا جا رہا ہے، جو بل
نہیں دے گا اسے بجلی نہیں ملے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری پاور ڈویژن عرفان علی بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے توانائی کے شعبے کی صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے ٹھوس اور عملی اقدامات کیے ہیں، بجلی کے ٹیرف میں زیادہ اضافے کی سفارش کی گئی تھی لیکن ہماری حکومت نے ایک روپے 27 پیسے کا اضافہ کیا تھا اور اس میں سے بھی 300 یونٹ تک بجلی استعمال کرنے والے صارفین جو مجموعی صارفین کا 75 فیصد ہیں ان کے لیے بجلی کی قیمت نہیں بڑھائی گئی، چھوٹے دکانداروں کو بھی اضافے سے مستثنا قرار دیا گیا اور بجلی کی فراہمی کے لیے سبسڈی دی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سابق حکومتوں کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے 60 فیصد بجلی درآمدی ایندھن سے پیدا ہو رہی ہے، ہم 2025ء تک انرجی مکس کو 20 فیصد تک قابل تجدید توانائی اور 2030ء تک 30 فیصد قابل تجدید توانائی پر منتقل کر دیں گے اور 2030ء تک مجموعی طور پر بجلی کی 70 فیصد پیداوار مقامی ذرائع سے حاصل ہونا شروع ہو جائے گی، جلد توانائی کے شعبے میں نمایاں تبدیلی نظر آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر آٹومیٹک میٹر کا نظام لایا جا رہا ہے، آٹومیٹک میٹر نظام سے بجلی چوری کا خاتمہ ممکن ہو سکے گا۔ انہوں نے کہا کہ بجلی چوری میں ملوث 4 ہزار افراد کو گرفتار کیا گیا ہے، بجلی چوری میں ملوث محکمے کے افراد کے خلاف بھی کارروائی کی گئی ہے۔ دسمبر 2020ء تک گردشی قرض کا مکمل خاتمہ کریں گے، 8 ماہ میں بجلی کے شعبہ کی آمدنی میں 81 ارب روپے اضافہ ہوا ہے اور یہ آمدنی صرف نجی شعبے سے ہوئی ہے اور باقی آمدنی اس سے الگ ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو بھی بل ادا نہیں کرے گا اس کا کنکشن منقطع ہو گا، کسی کے ساتھ کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی۔