مقبوضہ کشمیر،پلوامہ میں شہداء کی نماز جنازہ میں ہزاروں افراد کی شرکت،ہڑتال اور مظاہرے

49

سری نگر(کے پی آئی) جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں شہید 4 نوجوانوں شوکت احمد ڈار،مظفر احمد شیخ،عرفان احمد وار،اور وسیم احمد نائیک کو سپردخاک کر دیا گیا، نماز جنازہ میں ہزاروں افراد نے شر کت کی ،اس موقع پر آزادی کے حق اور بھارت مخالف نعرے لگائے گئے ۔تفصیلات کے مطابق مطابق پلوامہ ضلع میں شہدا کی یاد میں اتوار کو مکمل ہڑتال رہی ، پنجگام پلوامہ میں گزشتہ روز بھارتی فوج نے شوکت احمد ڈار ولد غلام رسول ڈار ساکن پنجگام ،مظفر احمد شیخ ولد عبدالعزیز شیخ ساکن ٹہاب پلوامہ کے علاوہ عرفان احمد وار ساکن واڈورہ پائین سوپور کو شہید کر دیا تھا جبکہ سوپور میں وسیم احمد نائیک ولد عبدالغنی نائیک ساکن ادی پورہ بارسو کو شہید کر دیا گیا۔ پلوامہ میں مکمل ہڑتال جبکہ سوپور میں انٹر نیٹ سروسز بند کردی گئیں۔اس دوران ریل سروس بھی معطل کردی گئی۔۔ شوپیاں اور پلوامہ میں 3 روز کے دوران 9 نوجوان شہید ہوگئے ہیں۔ بھارتی فوج نے پنجگام کا محاصرہ کرکے گولا باری شروع کر دی تھی ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ گائوں میں اس قدر خوف و دہشت کا عالم تھا کہ کسی بھی گھر میںسحری نہیں کھائی جاسکی اور نہ فجر کی نماز کسی بھی مسجد میں ادا ہوئی۔ ٹہاب کے نوجوان کی شہادت کے ساتھ ہی یہاں نوجوان سڑکوں پر امڈ آئے اور انہوں نے فورسز کیمپ پر شدید پتھرائو کیا۔ اس کے بعد یہاں طرفین کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں جو دن بھر جاری رہیں۔فورسز نے بے تحاشا شلنگ بھی کی۔پنجگام کے شوکت احمدنے گورنمنٹ ڈگری کالج ترال سے 2009میں بی اے کی ڈگری حاصل کی تھی ،شوکت کی لاش لواحقین کے حوالے کی گئی جس کے بعد اسے آبائی گائوں لایا گیا جہاں ہزاروں کی تعداد میں لوگ موجود تھے۔اسے جلوس کی صورت میں جنازہ گاہ تک لیا گیا جس کے بعد اسے سپرد خاک کردیا گیا۔اس موقع پر یہاں اسلام اور آزادی کے حق میں نعرے بلند کیے گئے۔ٹہاب پلوامہ کے مظفر احمد کی لاش جب لواحقین کے حوالے کی گئی تو نوجوان مشتعل ہوئے اور انہوں نے نزدیکی فورسز کیمپ کی جانب پیش قدمی کی اور اس پر پتھرائو کیا۔اس دوران علاقے میں شدید جھڑپیں ہوئیں اور نماز جنازہ کی تیاری بھی ہونے لگی۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ فورسز اہلکاروں نے جنازہ گاہ میں بھی شیلنگ کی جس کے نتیجے میں جنازہ پڑھنے میں کئی بار خلل پڑا ۔