ذاتی رنجش پر میونسپل کمیٹی ماتلی کو بجلی سے محروم کردیا، عبدالرحمن کشمیری

83

ماتلی (نمائندہ جسارت) وائس چیئرمین میونسپل کمیٹی ماتلی عبدالرحمن کشمیری کی قیادت میں کونسلر کرم اللہ نظامانی، علی نواز کشمیری اور اکبر کشمیری نے پریس کانفرنس میں چیئرمین عبدالرؤف نظامانی پر الزام لگایا کہ انہوں نے محض ذاتی مخالفت پر میرے دفتر کی بجلی منقطع کرادی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیئر مین اس بات پر ناراض ہیں کہ ہم 12 کونسلروں نے ان کیخلاف ڈپٹی کمشنر بدین کے پاس تحریک عدم اعتماد کیوں جمع کرائی ہے۔ وائس چیئرمین نے کہا کہ صرف میرے دفتر کی بجلی بند کرنے لیے پورے میونسپل کمیٹی کو بجلی سے محروم کردیا گیا ہے۔ وائس چیئرمین نے کہا کہ بجلی بند ہونے کی وجہ سے اس شدید گرمی میں میونسپل کمیٹی کے ملازمین سخت پریشان ہیں جبکہ کمپوٹر بند ہوجانے سے کمپیوٹرائزڈ سرٹیفکیٹ جاری نہ ہونے کی وجہ سے شہری سخت پریشان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام چیئرمین مخالف کونسلرز وائس چیئرمین کے دفتر ہی میں بیٹھ کر اپنے وارڈ کے باشندوں کے مسائل سنتے اور انہیں حل کراتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ ہم نے 8 اپریل کو چیئرمین کے خلاف ڈپٹی کمشنر بدین کے پاس تحریک عدم اعتماد کی درخواست جمع کرائی تھی اور 13 روز گزر جانے کے باوجود تاحال ہماری درخواست پر کسی قسم کی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی۔ ہم چیئرمین مخالف کونسلرز ڈپٹی کمشنر بدین سے ملاقات کرکے انہیں اپنے تحفظات سے آگاہ کریں گے۔ دوسری جانب وائس چیئرمین کے دفتر سمیت پورے میونسپل کمیٹی کی بجلی بند کیے جانے کے معاملے پر رابطہ کرنے پر چیئرمین عبدالرؤف نظامانی نے کہا کہ اضافی ریڈنگ کی جانچ کرنے پر میونسپل کے میٹر کی لائن سے قریبی محلوں کو بجلی دیے جانے پر بجلی منقطع کرائی تھی۔ میونسپل کے میٹر کی لائن کوچوری سے محفوظ بنایا جارہا ہے، جس کے بعد میونسپل کمیٹی کی بجلی بحال کردی جائے گی۔