میئر اور بلدیہ عظمیٰ کے اپوزیشن لیڈر میں گٹھ جوڑ کا انکشاف

124

کراچی ( رپورٹ:محمد انور) بلدیہ عظمیٰ کراچی میں کم گریڈ کے افسران کی اعلیٰ عہدوں پر موجودگی ہنوز برقرار ہے۔ تاہم میئر او پی ایس افسران کو ہٹانے کے بجائے کے ایم سی کونسل کی اہم
اپوزیشن شخصیت کے ساتھ مبینہ طور پر مل کر میٹرو پولیٹن کمشنر کو ہٹانے کی کوشش شروع کردی ہے، جس کے نتیجے میں مختلف امور بری طرح متاثر ہو رہے ہیں۔ ادھر کونسل میں پیپلز پارٹی کے اپوزیشن لیڈر کرم اللہ وقاصی نے چند روز قبل چیف سیکرٹری سندھ کو لکھے گئے خط میں بتایا کہ میٹرو پولیٹن کمشنر گریڈ19 کے افسر ہیں مگر انہیں میٹروپولیٹن کمشنر کی گریڈ20 کی اسامی پر تعینات کیا گیا ہے جو عدالت عظمیٰ کے حکم کی خلاف ورزی ہے۔ واضح رہے کہ ایم سی کی اسامی پر تعیناتی سمیت گریڈ17 اور اس سے اوپر تمام عہدوں پر تقرر کا اختیار حکومت سندھ کو ہی حاصل ہے جبکہ اس سے قبل بھی ایم سی کے عہدے پر گریڈ19 کے سندھ گورنمنٹ کے افسر متعین کیے جاتے رہے تاہم اس پر کسی نے اعتراض نہیں کیا تھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایم سی ڈاکٹر سیف الرحمن کی مخالفت مبینہ طور پر اہم شخصیات کے درمیان گٹھ جوڑ کا نتیجہ ہے۔ یاد رہے کہ کے ایم سی میں متعدد اسامیوں پر جونیئر اور کم گریڈ کے افسران میئر کے حکم پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔ ان میں سینئر ڈائریکٹر اینٹی انکروچمنٹ، ڈائریکٹر لینڈ، چیف فائرافسر، ڈائریکٹر فوڈ اور کوالٹی کنٹرول سمیت دیگر اسامیاں شامل ہیں جبکہ متعدد اسامیوں پر خلاف ضابطہ اور عدالت عظمیٰ کے حکم کے خلاف مقرر کیے گئے ہیں ۔ کے ایم سی کے محکمہ باغات میں معطل افسر آفاق مرزا ڈائریکٹر جنرل باغات کی اسامی پرغیر قانونی متعین ہیں، اسی طرح باغات میں کنسلٹنٹ کی حیثیت سے سابق ڈی جی بھی سرگرم ہیں تاہم اپوزیشن لیڈر نے ان پر کبھی اعتراض نہیں کیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ شخصیت کی مبینہ طور پر خواہش اور کوشش ہے کہ کسی طرح نااہل اور کرپشن کے الزامات میں ملوث ایس یو جی سروس کے ایم بی بی ایس ڈاکٹر کو ایک بار پھر میٹروپولیٹن کمشنر کی اضافی ذمے داری دلادی جائے تاکہ کے ایم سی بجٹ کے غیر قانونی استعمال پرمزاحمت نہ ہوسکے اور کرپشن بلا روک ٹوک چل سکے۔ یاد رہے کہ میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن نے گزشتہ سال بجٹ کے خلاف ضابطہ استعمال کا سخت نوٹس لے کر تمام محکموں کے فنڈ کو بجٹ کے مطابق استعمال کرنے کی پابندی عاید کردی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ