کرکٹ ورلڈ کپ ٹرافی کا شہر قائد میں قیام

117

کراچی: کرکٹ ورلڈ کپ ٹرافی اسلام آباد سے کراچی پہنچ گئی ہے جس کی تقریب رونمائی نیشنل اسٹیڈیم میں ہوئی۔

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان معین خان نے ٹرافی کی رونمائی کی اور کہا کہ ورلڈ کپ کا فارمیٹ 1992 ورلڈ کپ کے فارمیٹ کی طرح اچھا ہے۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس بار ورلڈ کپ پاکستان ہی جیتے گا کیونکہ کھلاڑیوں پر پورا اعتماد ہے اور یہی کھلاڑی ورلڈ کپ جتوائیں گے۔

معین خان کا کہنا تھا کہ سرفراز کی قائدانہ صلاحیتوں سے کسی کو انکار نہیں کیونکہ ان کی بطور کپتان اور وکٹ کیپر میچ جیتنے والی کارکردگی رہی ہے۔ سرفراز سیکھنے میں دلچسپی دکھاتے ہیں اور اگر وہ خود پرفارم کریں گے تو بہترین نتائج آئیں گے۔

معین خان کے مطابق فی الحال نئے لڑکے ایسے نہیں کہ انہیں موقع دیا جائے تاہم موجودہ 17، 18 لڑکوں کو ہی اعتماد دلانا چاہیے، پوری ٹیم کو مل کر محنت کرنے کی ضرورت ہے لیکن اگر خوش فہمی میں رہے تو ورلڈ کپ کی ٹرافی پاکستان آنا مشکل ہوگی۔

کراچی میں ورلڈ کپ کرکٹ کی ٹرافی کو چار مقامات پر عوام کے سامنے پیش کیا جائے گا۔ نیشنل اسٹیڈیم میں شائقین کرکٹ ٹرافی کا دیدار کریں گے۔ اسٹیڈیم میں رونمائی کے بعد اسے مہٹہ پیلس اور فریئرہال لے جایا جائے گا۔

واضح رہے کہ کرکٹ ورلڈ کپ ٹرافی 6 روز پاکستان میں رہنے کے بعد کل بنگلہ دیش روانہ کردی جائے گی۔

عالمی کپ کی ٹرافی نے 27 اگست کو دبئی سے اپنے سفر کا آغاز کیا تھا جو کہ5 براعظموں، 21 ممالک کے 60 شہروں کا سفر طے کرکے 16 فروری کو لندن پہنچے گی ۔ پہلی مرتبہ ٹرافی کی رونمائی ان ممالک میں بھی ہوگی جو آئی سی سی کا حصہ نہیں۔ ورلڈ کپ ٹرافی کی آخری منزل لندن ہے جہاں وہ 19 فروری کو پہنچے گی، اور لندن ایونٹ کی میزبانی کرے گا۔

ٹرافی لندن آمد کے بعد انگلینڈ اور ویلز کا 100 روزہ دورہ کرے گی اور14 جولائی دو ہزار انیس کو لارڈز گراؤنڈ میں فاتح ٹیم کے سپرد کی جائے گی۔

ورلڈ کی اس ٹرافی کے گلوبل ٹور کا مقصد پرستاروں کو کرکٹ سے قریب لانا اور انہیں ورلڈ کپ میں شرکت کا احساس دلانا ہے۔

میگا ایونٹ ورلڈ کپ کرکٹ تیس مئی سے چودہ جولائی دو ہزار انیس تک انگلینڈ اور ویلز میں منعقد ہوگا، جہاں میزبان انگلینڈ اور جنوبی افریقہ ٹورنامنٹ کا پہلا میچ اوول کے تاریخی میدان پر 30 مئی کو کھیلیں گے، جب کہ پاکستانی ٹیم اپنا پہلا میچ ویسٹ انڈیز کے خلاف اکتیس مئی کو ٹرینٹ برج کے میدان میں کھیلے گی۔

پاکستان کا اس کے بعد تین جون کو انگلینڈ، سات جون کو ایک اور میچ اور 12 جون کو آسٹریلیا سے میچ ہوگا۔ پاکستان اور انڈیا کے درمیان اہم ٹاکرا 16 جون کو اولڈ ٹریفرڈ میں ہوگا۔ پاکستانی ٹیم اس کے بعد جنوبی افریقہ کے خلاف 23 جون، نیوزی لینڈ کے خلاف 26 جون اور افغانستان کے خلاف 29 جون کو مدمقابل ہوگی۔

پاکستانی ٹیم اپنا آخری لیگ میچ پانچ جولائی کو لارڈز کے تاریخی میدان پر کھیلے گی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ