کوٹری، انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر امیدواروں کو شوکاز

48

کوٹری (نمائندہ جسارت) ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ سیل جامشورو کاغذی کارروائیوں تک محدود، انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر پیپلز پارٹی اور جامشورو اتحاد کے امیدواروں کو شوکاز نوٹسز کا اجرا، کارکنوں کو پابند بنانے کی ہدایت، متنبہ کرنے کے باوجود غیر قانونی جھنڈے، بینرز اور پینا فلیکس اتارے نہ جاسکے ،بلدیاتی نمائندوں سمیت سرکاری ملازمین کی سیاسی سرگرمیوں پر متعدد شکایت درج ہوگئیں۔ڈسٹرکٹ مانٹرنگ شکایتی سیل جامشورو کے مطابق انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر پیپلزپارٹی کے امیدوار ملک اسد سکندر ،گیان چند ایسرانی اور سکندر علی راہپوٹو سمیت سندھ یونائیٹیڈ پارٹی کے سربراہ سید جلال محمود شاہ اور جامشورو اتحاد کے آزاد امیدوارڈاکٹر سکندر شورو کو شوکاز نوٹس کا اجراء کردیا گیا ہے جس میں انہیں متنبہ کیا گیا ہے کہ وہ اپنے کارکنوں اور ہمدردوں کو پابند کریں کہ وہ انتخابی ضابطہ اخلاق کے مطابق بینرز ،پوسٹر اور پینا فلیکس آویزاں کریں بصورت دیگر مزید کاروائی کی جاسکتی ہے۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے انتخابی ضابطہ اخلاق پر عملدرآمد نہ کرنے کی صورت میں 50ہزار جرمانہ اور ناہل قرار دینے کی سزا دی جاسکتی ہے ۔دوسری جانب مانٹرنگ سیل جامشورو کو سرکاری ملازمین اور بلدیاتی نمائندوں کی سیاسی سرگرمیوں کے حوالے سے متعدد شکایت موصول ہوئی ہیں جس پر شکایت کی جانچ پڑتال کی جارہی ہے جبکہ متعدد افراد کو شوکاز نوٹس بھی اجرا کیا گیا ہے۔ دوسری جانب ڈسٹرکٹ مانٹرنگ آفیسر جامشورو شازیہ قاضی سے متعدد بار رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی مگر انہوں نے کال موصول نہیں کی جبکہ ڈسٹرکٹ الیکشن آفیسر جامشورو نوید عزیز نے بتایا کہ مانیٹرنگ ٹیم اپنا کام کررہی ہے شوکاز نوٹسز کا اجرا بھی کیا گیا ہے کسی بھی جماعت یا فرد کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دی جاسکتی اگر شوکاز نوٹسز کے بعد بھی خلاف ورزیاں جاری رہی تو سخت اقدام کیاجائیگا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ