حیدر آباد، مضر صحت اشیا بنانے والے دو کارخانے سر بمہر

32

حیدر آباد (اسٹاف رپورٹر) میونسپل کارپوریشن شعبہ خوراک نے کنفیکشنری آئٹمز میں رنگ کی ملاوٹ، سکرین اور رجسٹرڈ کمپنیوں کی پیکنگ کرکے مارکیٹ میں مضر صحت کیچپ کی تیاری اورپیکنگ میں ملوث دوبڑے کارخانوں پر چھاپے مارکرنمونے حاصل کرلیے، بچوں کے لیے تیار کی جانے والی ٹافیوں میں رنگ اور سیکرین کی ملاوٹ پر کارروائی عمل میں لائی گئی، شعبہ خوراک کی جانب سے کارروائی کے دوران فیکٹری مالکان کے غنڈہ عناصر کی شدید مزاحمت، عملے کو دھمکیاں، داخلے سے روکنے کی کوشش، جدید مشینری سے تیار کیے گئے مال کو روزانہ ہول سیل مارکیٹوں اور درجنوں گاڑیوں کے ذریعے شہر بھر میں فراہم کیا جاتا ہے، میونسپل کارپوریشن شعبہ خوراک کے عملے نے فوڈ کنٹرولنگ آفیسر توحید احمد راجپوت کی سرکردگی میں شام داس پارک سابقہ نور محل سینما کے قریب کنفیکشنری آئٹمز تیار کرنے والے دو بڑے کارخانوں پر چھاپے مار کر ایک درجن سے زائد اشیا کے نمونے حاصل کرکے لیبارٹری روانہ کردیے، محکمہ خوراک کے مطابق کارروائی بچوں کی ٹافیاں، بنٹیز، چاکلیٹ سمیت دیگر آئٹمز میں رنگ اور سکرین کی ملاوٹ کی اطلاع پر کی گئی، جبکہ درجنوں غیر معیاری آئٹمز بغیر کسی رجسٹرڈ کے تیار کی جارہی تھیں۔ کارروائی کے دوران عملے کو کارخانوں کے غنڈہ عناصر کی جانب سے شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا اور عملے کو کارخانوں میں داخل ہونے سے روکنے کی کوشش کی گئی، شعبہ خوراک کی جانب سے جن دو کارخانوں کیخلاف کارروائی کی گئی، ان میں حنا انٹر پرائزز اور ڈائیلاٹ کنفیکشنری شامل ہیں۔ فوڈ کنٹرولنگ آفیسر توحید احمد راجپوت نے بتایا کہ دونوں فیکٹریوں میں مضر صحت رنگ اور سیکرین کی ملاوٹ کرکے درجنوں اقسام کے کنفیکشنری آئٹمز تیار کرکے شہر بھر کی ہول سیل مارکیٹوں اور درجنوں گاڑیوں کے ذریعے شہر بھر میں سپلائی کیا جاتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں کارخانوں سے ایک درجن سے زائد کنفیکشنری آئٹمز کے نمونے حاصل کرکے لیبارٹی روانہ کیے گئے ہیں، جن کی رپورٹ آتے ہی قوانین کے تحت کارروائی کی جائے گی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ