جاپان میں 6.9 شدت کا زلزلہ، سونامی کی وارننگ جاری

144

جاپان میں 6.9 شدت کے زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کئے گئے ہیں ۔ حکام نے فوری سونامی کی وارننگ جاری کرتے ہوئے عوام کو ساحلی علاقوں سے دور رہنے کی ہدایت کی  ۔

ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق منگل کی صبح جاپان کے جزیرے ہونشو میں 6.9 شدت کے زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے جس کے فوری بعد سونامی کی وارننگ جاری کردی گئی جبکہ آفٹر شاکس بھی محسوس کئے گئے۔ زلزلے سے عمارتیں لرز اٹھییں اورعوام میں شدید خوف پھیل گیا لوگ اپنے گھروں اور دفاتر سے باہر کھلے مقامات پر نکل آئے جبکہ زلزلے کے تھم جانے کے بعد بھی لوگوں کی کثیر تعداد خوفزدہ ہے۔

امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق ریکٹر اسکیل پر زلزلے کی شدت 6.9 ریکارڈ کی گئی جب کہ اس کی گہرائی 11.4 کلو میٹر زیر زمین تھی ۔ اس زلزلے کے بعد پانچ گھنٹوں کے دوران کم از کم 8 مرتبہ آفٹر شاکس محسوس کئے گئے جس کی زیادہ سے زیادہ شدت ریکٹر اسکیل پر 5.4 ریکارڈ کی گئی۔

جاپان کے زلزلہ پیما مرکز کے مطابق زلزلے کے بعد 1 سے 3 میٹر بلند لہریں ساحلوں سے ٹکرائی تھیں جس کے پیش نظر سونامی  کی وارننگ جاری کی گئی۔ زلزلے کے بعد فوکوشیما کی انتظامیہ میں جاپان کے ایٹمی پاور پلانٹ کی حفاظت سے متعلق تشویش کی لہر دوڑ گئی ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جاپان کی پولیس کے ترجمان کا کہناتھا کہ زلزلے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا لیکن واقعے میں تین لوگ زخمی ہوئے ہیں جبکہ فوگو شیما اور میاگی صوبوں میں بھی سونامی وارننگ جاری کردی گئیں ہیں۔ زلزلے کے بعد متاثرہ علاقے میں انیس  سو کے قریب گھروں کی بجلی بند ہوگئی تھی۔

ٹوکیوالیکٹرک پاور کے ترجمان کا کہنا تھا کہ شدید زلزلے کے جھٹکوں کے بعد کچھ دیر کے لئے کولنگ سسٹم کو بند کردیا گیا تھا تاہم سسٹم کو دوبارہ فعال کردیا گیا ہے اور اس میں کوئی خرابی پیدا نہیں ہوئی ہے۔ دوسری جانب شہر میں ٹرینوں کی آمدورفت کو روک دیا گیا تھا اور فضائی آپریشنز بھی معطل کردیے گئے تھے۔

واضح رہے کہ آج آنے والے زلزلے کے جھٹکے اسی علاقے میں محسوس کئے گئے ہیں جہاں مارچ 2011 میں 9.0 شدت کا زلزلہ آیا تھا جس کے نتیجے میں بیس ہزار سے زائد افراد ہلاک اور ہزاروں زخمی  ہوگئے تھے جبکہ لاکھوں لوگ گھروں سے بے گھر ہوگئے تھے۔ یہ زلزلہ فوگو شیما میں واقع جاپان کے نیوکلیئر پاور پلانٹ میں بھی تباہی کا باعث بنا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ