پاکستان حج والنٹیئرز گروپ الریاض کی سالانہ تقریب تقسیم اسناد

127

پاکستان حج والنٹیئرز گروپ کی جانب سے سعودی دارالحکومت ریاض کے ایک مقامی ہوٹل میں رضاکاروں کو تعریفی اسناد کی تقسیم کے لیے خصوصی تقریب کا انعقاد کیا گیا، جس میں گروپ سے وابستہ رضاکاروں، سماجی و سیاسی تنظیموں کے نمایندوں اور صحافت سے وابستہ افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ ریاض سے گروپ کے سینئر رکن ابرار تنولی نے نمایندہ جسارت سید مسرت خلیل کو تقریب کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ سفیر پاکستان راجا علی اعجاز نے پاکستان حج والنٹیئرز گروپ کے رضاکاروں اور گروپ انتظامیہ کو خراج تحسین پیش کیا ہے۔ انہوں نے اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلاتے ہوئے گروپ کی باقاعدہ سرپرستی کا وعدہ بھی کیا۔
سفیر پاکستان نے اپنے صدارتی خطاب میں کہا کہ گروپ کے ارکان نہ صرف اللہ کی رضا کے لیے بلا معاوضہ خدمات سرانجام دیتے ہیں بلکہ پاکستان کی نیک نامی اور وقار کا باعث بھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ برس جب میں حج کی ادائیگی کے لیے منیٰ میں تھا تو میں نے خود وہاں دیکھا کہ پاکستانی پرچم سے مزین جیکٹ اور ٹوپی پہنے رضاکار حجاج کی رہنمائی کا فریضہ سرانجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرے لیے یہ خوشگوار حیرت کا باعث تھا کیونکہ میں اس سے پہلے اس گروپ کے بارے میں نہیں جانتا تھا کہ پاکستانی رضاکار دنیا بھر سے آئے ہوئے حجاج کی خدمات سرانجام دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان رضاکاروں کو پاکستانی پرچم والی جیکٹیں پہنے اللہ کے مہمانوں کی خدمت کرتے دیکھ کر میرا سر فخر سے بلند ہوگیا۔
سفیر پاکستان راجا علی اعجازنے گروپ کو درپیش مسائل کے حل جن میں رضاکاروں کی تربیت کے لیے سعودی عرب کے مختلف شہروں میں موجود کمیونٹی اسکولوں کے ہالز کی فراہمی اور گروپ کی رجسٹریشن کے لیے اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔
ابرار تنولی نے حج گروپ کی گزشتہ برس کی کارکردگی رپورٹ بھی پیش کی، جس میں بتایا گیا کہ گزشتہ سال حج آپریشن میں گروپ کے 2 ہزار سے زائد رضاکاروں نے حصہ لیا اور 4 لاکھ حجاج کو ان کے خیموں، ریلوے اسٹیشنوں، میڈیکل سینٹرز اور دیگر مقامات تک پہنچنے میں مدد کی۔ اس دوران 2500 حاجیوں کو جو پیدل چلنے سے قاصر تھے ویل چیئرز کی مدد سے ان کے مطلوبہ مقامات تک پہنچایا۔ ابرار تنولی کا مزید کہنا تھا کہ گروپ ایسے حجاج کو جو کسی حادثے کا شکار ہو جاتے ہیں یا بیماری کے باعث طواف زیارت کرنے کی سکت نہیں رکھتے، انہیں ایمبولینس یا گاڑیوں کے ذریعے حرم شریف لے جا کر ویل چیئرز پر طواف زیارت بھی کرایا جاتا ہے تاکہ وہ حج کی سعادت سے محروم نہ رہیں۔ اس سلسلے میں گزشتہ سال 60 افراد کو طواف زیارت کرایا گیا۔ انہوں نے گروپ کی سرگرمیوں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ پی ایچ وی جی حج کے دوران کئی منصوبوں پر بیک وقت کام کرتا ہے، جن میں حاجیوں کی آمد کے ساتھ حرم مکی کے اطراف حاجیوں کی رہنمائی، ان کی رہائشی عمارتوں میں جا کر مشاعر مقدسہ اور حج کی ادائیگی کے دوران پیش آنے والے مسائل اور ان سے نبردآزما ہونے کے لیے تربیتی نشستوں کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے۔ ابرار تنولی نے سالانہ کارکردگی رپورٹ میں بتایا کہ گزشتہ حج کے دوران ڈیڑھ لاکھ پانی کی بولیں اور 400 ویل چیئرز ضرورت مند حاجیوں میں تقسیم کی گئیں اور العزیزیہ پراجیکٹ کے تحت ہزاروں حجاج کو ان کی رہایشی عمارتوں تک پہنچنے میں مدد فراہم کی گئی۔ اس سے قبل گروپ کے کام کے حوالے سے ایک تعارفی ڈاکومینٹری بھی دکھائی گئی جس میں گروپ کے مقاصد، کام کرنے کا طریقہ اور دیگر سرگرمیوں پر روشنی ڈالی گئی۔
اس موقع پر گروپ کے سینئر رہنما پروفیسر ڈاکٹر ظفر الٰہی نے انسانیت کی خدمت اور حج رضاکاروں کی اہمیت کے موضوع پر اپنے خطاب میں کہا کہ ہم سب کو انسانیت کی خدمت و فلاح کے لیے بھرپور کوششیں کرنی چاہییں۔ انہوں نے کہا کہ حج رضاکار گروپ انتہائی منظم انداز اور بہترین صلاحیتوں کے ساتھ اللہ کے مہمانوں کی خدمت کا فریضہ انجام دیتا ہے۔ ڈاکٹر ظفر الٰہی کا کہنا تھا کہ ہماری بھلائی اسی میں ہے کہ ہم دوسروں کی مدد کریں۔
تقریب سے ’’قرآن سمجھیے‘‘ پروگرام کے سینئر رکن تنویر احمد نے ایک تفصیلی جائزہ پیش کیا، جس میں انہوں نے کہا کہ ہم سب کو قرآن سمجھیے پروگرام میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہیے تاکہ قرآن پاک کو سمجھ کر پڑھ سکیں اور اللہ کے احکامات پر ٹھیک طرح عمل پیرا ہو سکیں۔
تقریب کے اختتام پر خطاب کرتے ہوئے پی ایچ وی جی الریاض کے کوآرڈینیٹر عبداللہ اسلم راجا نے سفیر پاکستان راجا علی اعجاز، کمیونٹی ویلفیئر اتاشی محمود لطیف اور ہال میں موجود مہمانوں، گروپ کے رضاکاروں، صحافیوں اور گروپ انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ انسانی فلاح ہمارا مقصد ہونا چاہیے۔
تقریب میں 250 رضاکاروں میں تعریفی اسناد تقسیم کی گئیں اور گروپ کی مدد اور تعاون فراہم کرنے پر پاکستان انٹرنیشنل اسکول الریاض کے پرنسپل ائرکموڈور(ر) نعیم اختر اور پاکستان کلچرل گروپ کے سیکرٹری جنرل ظفراللہ خان کو یادگاری شیلڈز بھی دی گئیں۔ اس موقع پر گروپ کی جانب سے سفیر پاکستان راجا علی اعجاز کو یادگاری شیلڈ پیش کی گئی۔ آخر میں گروپ کے سینئر رہنما انجینئر جلیل حسن نے دعا کرائی ۔
اس سے قبل تقریب کا باقاعدہ آغاز گروپ کے سینئر رکن سید بادشاہ نے تلاوت کلام پاک سے کیا اور ہدیہ نعت صحافی عابد شمعون چاند نے پیش کیا جب کہ نظامت کے فرائض ابرار تنولی نے ادا کیے۔