سیاسی نے وفاؤں نے ملک کا سب کچھ داؤ پر لگادیا،لیاقت بلوچ

91

لاہور (نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اور سیاسی پارلیمانی امور کمیٹی کے صدر لیاقت بلوچ نے لاہور میں تاجروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہاہے کہ اپوزیشن جماعتوں کی ترجیحات عوامی خواہشات سے متصادم ہیں،جماعت اسلامی مہنگائی ، بے روزگاری ، سود کی لعنت اور آئی ایم ایف کی غلامی کے خاتمے کے لیے میدان عمل میں نکل آئی ہے۔ غریب ، مظلوم اور بے کس عوام کو بحرانوں سے نکالیں گے ۔ 2018 ء کاانتخاب مشکوک اور دھاندلی زدہ ہے ۔ تمام جمہوری قوتوں نے تحفظات کے باوجود جمہوری عمل کو جاری رکھنے کو ترجیح دی ۔ اسٹیبلشمنٹ کی کھل کر مداخلت پر بھی خاموشی اختیار کی
گئی لیکن تبدیلی سرکار عام آدمی کے لیے عذاب ، بوجھ اور ذلت بن گئی ہے ۔ غریب تو ہر دور میں ہی پستا رہاہے لیکن عمران خان حکومت نے متوسط سفید پوش طبقے کو بھی بے حال ، مایوس اور تباہ کر دیاہے ۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ عوام فوجی آمریتوں ، بھٹو خاندان اور شریف خاندان کے اقتدار سے مایوس ہوئے اور عمران خان سے بڑی توقعات لگالیں ۔ پی ٹی آئی حکومت کا کوئی وژن اور کوئی لائحہ عمل نہیں ۔ سیاسی بے وفا اور مانگے ہوئے مسلط کردہ پھٹیچرماہرین نے سب کچھ دائو پر لگادیاہے ۔ قرضے ، کرپشن ، شر ح سود اور کشکول کے سائز میں اضافہ ، پیداوار ی لاگت میں اضافہ ، زراعت ، صنعت ، تجارت کا پہیہ جام کر رہاہے ۔ بے روزگاروں کے لشکر ہر چیز کو تہس نہس کردیں گے ۔ انہوںنے کہاکہ قومی بجٹ نامنظور اور ناقابل برداشت ہے ۔ حکومت ضد چھوڑ ے ، بجٹ واپس لے اور خود انحصاری و قومی ترجیحات کا نیا بجٹ بنائے ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ تاجر برادری کی پریشانی خطرناک ہے ۔ وفاقی ، صوبائی حکومتوں کو احساس ہی نہیں ، ملک خطرات میں گھرا ہے ۔ حکومت نااہل اور کھلنڈروں کے ہتھے چڑھ گئی ہے ۔ اسمبلیاں عوامی مسائل بڑھا رہی ہیں جبکہ اپوزیشن جماعتوں کی ترجیحات عوامی خواہشات سے متصادم ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ جماعت اسلامی اللہ پر کامل یقین اور عوام کے بھروسے پر بحرانوں کے خلاف فیصلہ کن جدوجہد کر ے گی ۔
لیاقت بلوچ