بلوچستان حکومت غیر منتخب افراد چلار ہے ہیں،حزب اختلاف

42

کو ئٹہ(نمائندہ جسارت)بلوچستان کی صوبائی حکومت غیر منتخب افراد کے ذریعے چلا ئی جا رہی ہے، 12جون کے اجلاس میں تحریک عدم اعتماد نہیں لا ئی جائے گی،بتایا جائے فوجی بجٹ میں کمی سے کتنی رقم بچے گی اوراسے کہاں خرچ کیاجائے گا۔ان خیالات کا اظہاربلوچستان اسمبلی کی اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں نے کوئٹہ میں اجلاس کے بعد پریس کانفرنس میں کیا۔ قائد حزب اختلاف ملک سکندر ایڈوو کیٹ ، نواب اسلم رئیسانی ، ثناء اللہ بلوچ ، ملک نصیر شاہوانی ، نصر اللہ زیرے نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے مزید کہا کہ حکومت کفایت شعاری اور فنڈز نہ ہونے کا شکوہ کر رہی ہے جبکہ حکومتی نمائندوں کو 60 کروڑ روپے فی کس جاری کیے گئے ہیں ، صوبائی حکومت کوغیر منتخب افرادکے ذریعے چلایا جا رہا ہے تاکہ کرپشن کی راہیں تلاش کی جا سکیں۔ رہنمائوں نے فوج کے بجٹ میں کمی کا خیرمقدم کرتے ہوئے مطالبہ کیاکہ عوام کو بتایا جائے کہ بجٹ میں کمی سے کتنی رقم بچے گی اور اسے کہاں خرچ کیا جائے گا ، وفاقی حکومت آئی ایم ایف کیساتھ تمام صوبوں کو یکساں فنڈز کی تقسیم کا معاہدہ سامنے لائے۔ انہوں نے کہا کہ کل ہونے والے اجلاس میں بجٹ ، سی پیک ، پی ایس ڈی پی ، بی ڈی اے ملازمین کے مسائل پر بحث کی جائے گی،حزب اختلاف کے رہنمائوں نے کہا کہ اپوزیشن کی جانب سے 6 رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو پی ایس ڈی پی سمیت دیگر معاملات پر نظر رکھے گی۔