اسرائیل نے 12 فلسطینی گرفتار کرلیے‘ 2ماہ میں تعداد 900ہوگئی

47
مقبوضہ بیت المقدس: مسلمان قبلہ اول میں نمازِ تراویح ادا کررہے ہیں‘ قابض صہیونی فوج مسلمانوں کو مسجد بدر کررہی ہے
مقبوضہ بیت المقدس: مسلمان قبلہ اول میں نمازِ تراویح ادا کررہے ہیں‘ قابض صہیونی فوج مسلمانوں کو مسجد بدر کررہی ہے

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) قابض صہیونی فوج نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے مختلف شہروں میں پیر کے روز سحری کے بعد فلسطینیوں کے گھروں میں گھس کر لوٹ مار اور توڑ پھوڑ کی۔ اس دوران تلاشی کی آڑ میں 12 فلسطینی گرفتار کر لیے گئے۔مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی فوج کے بیان میں کہا گیا ہے کہ غرب اُردن میں تلاشی کی کارروائیوں میں حراست میں لیے گئے فلسطینیوں میں سیکورٹی اداروں کو مطلوب افراد بھی شامل ہیں۔ مقامی فلسطینی ذرائع کے مطابق صہیونی فوج نے غرب اُردن کے شمالی شہر قلقیلیہ سے سابق اسیر ابراہیم احمد عرباس کو حراست میں لے لیا۔اسرائیلی فوج نے مغربی قلقیلیہ کے کفر سابا اور صوفان قصبوں میں فلسطینیوں کے گھروں میں کریک ڈائون شروع کیا۔ اُدھر مغربی نابلس کے علاقے عوریف سے 24 سالہ عبدالقادر اسعد صباح اور مغربی جنین میں الیامون کے مقام سے علا علی اللبدی کو حراست میں لینے کی اطلاعات ہیں۔علاوہ ازیں فلسطین میں اسیران کے امور کے لیے کام کرنے والے اداروں کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ قابض اسرائیلی فوج نے گزشتہ 2 ماہ کے دوران 133 بچوں اور 23 خواتین سمیت مجموعی طورپر 900 فلسطینیوں کو حراست میں لے لیا۔ عرب ٹی وی کے مطابق فلسطینی سرکاری محکمہ اموراسیران۔ کلب برائے اسیران، الضمیر فائونڈیشن برائے حقوق اسیران اور دیگر اداروں کی طرف سے مشترکہ طورپر جاری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مارچ اور اپریل کے دوران اسرائیلی عدالتوں سے 112 فلسطینیوں کو بغیرکسی الزام کے انتظامی قیدکی سزائیں دی گئیں۔