بھارت میں بچوں کی صورتحال غیر تسلی بخش ہے‘ ورلڈ بینک

105

نئی دہلی (انٹرنیشنل ڈیسک) عالمی بینک نے صحت اور تعلیم کی بنیاد پر ’ہیومن کیپٹل انڈکس‘ نامی ایک رپورٹ جاری کی ہے جس میں 175 ممالک کی فہرست میں بھارت کو 115 نمبر پر رکھا ہے۔ رپورٹ کے مطابق نیپال، سری لنکا، میانمر اور بنگلادیش بھی بھارت سے اوپر ہیں۔ یہ رپورٹ بچوں کی صحت، تعلیم اور شرح اموات کی بنیاد پر تیار کی گئی ہے۔ ورلڈ بینک نے بھارت کو ایک میں سے 0.44 نمبر دیے ہیں، جس کا مطلب یہ ہے کہ بھارت میں پیدا ہونے والے بچے کی افادیت بڑے ہونے، صحت مند رہنے اور تعلیم حاصل کرنے کے بعد 44 فیصد ہوگی۔ اس فہرست میں نیپال کا نمبر 102، بنگلادیش کا 106 اور سری لنکا کا 74 ہے۔بھارت میں 60 سال تک زندہ رہنے کے امکانات 44 فیصد ہیں۔ سنگاپور، جنوبی کوریا، جاپان، ہانگ کانگ اور فن لینڈ سب سے اوپر ہیں۔ رپورٹ میں بھارت میں صحت اور تعلیم کے تناظر میں بچوں کی صورت حال کو سنگین قرار دیا گیا ہے۔ بھارت نے اس رپورٹ کو مسترد کیا ہے۔ وزارت مالیات کے بیان کے مطابق اس رپورٹ میں ان اسکیموں اور اقدامات کی جھلک نہیں ملتی جو انسانی ترقی کے لیے چلائے جا رہے ہیں۔بچوں کی صحت اور تعلیم کے شعبوں میں کام کرنے والی ایک نجی تنظیم ’ہم ہندوستانی‘ کے چیئرمین، محمد نظام نے ذرائع ابلاگ کو بتایا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ بھارت میں بچوں کی صحت اور تعلیم کی صورت حال اچھی نہیں ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ