وزرا کے بیانات سے شکوک و شبہات اور خدشات پیداہوگئے‘اے این پی

33

پشاور (آن لائن) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی ترجمان زاہد خان نے کہا ہے کہ حکومتی وزرا کے بیانات سے شکوک و شبہات اور خدشات جنم لے رہے ہیں اور دنیا کو یہ پیغام دیا جا رہا ہے کہ امن کے خلاف ہیں۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اپنے ایک بیان میں ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کیا۔ان کا کہنا تھا کہ طالبان ہزاروں پاکستانیوں کے قاتل ہیں لیکن وزیر خارجہ نے اقوام متحدہ میں اپنی تقریر کے دوران طالبان کو اثاثہ قرار دیا۔ اس تقریر سے دنیا کو یہ پیغام دیا گیا کہ ہم امن کے خلاف ہیں۔زاہد خان نے کہا کہ وزیر
خارجہ کی تقریر کے موقع پر کالعدم تنظیموں کے سربراہ وزیر مذہبی امور سے ملاقات کرتے ہیں جس سے خدشات بڑھ گئے ہیں کہ حکومت ہی دہشت گردوں کی سرپرستی کر رہی ہے۔انہوں نے وزیر اطلاعات کے بیان پر بھی تعجب کا اظہار کیا جس میں انہوں نے اعتراف کیا کہ فوج اور عدلیہ حکومت کی پشت پر ہیں۔زاہد خان نے کہا کہ حکومتی وزرا سارا کھیل قوم کے سامنے لا رہے ہیں۔ سیاسی معاملات میں عدلیہ اور فوج کا نام استعمال کیا جانا بذات خود سوالیہ نشان ہے۔ انہوں نے کہا کہ بدعنوانی کے خلاف واویلا کرنے والی حکومت کے زیادہ تر وزرا ہی خود نیب زدہ ہیں۔عوامی نیشنل پارٹی کی مرکزی کونسل کے اجلاس میں قراردادیں متفقہ طور پر منظورکی گئیں‘اجلاس میں کہا گیا کہ ملک میں مہنگائی کا طوفان اور ٹیکسوں کی بھرمار عوام دشمن پالیسی ہے، حکومت نے آتے ہی غریب عوام پر مہنگائی اور ٹیکسوں کا بم گرا دیا، بجلی گیس ،پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہیں ۔اے این پی نے مطالبہ کیاکہ قیمتوں میں اضافے اور نئے ٹیکسوں کے نفاذ کا فیصلہ فوری طور پر واپس لیا جائے اور غریب عوام کو ریلیف پہنچانے کے لیے فوری اقدامات اٹھائے جائیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ