سیکورٹی الرٹ کی وضاحت کے لئے نیکٹا حکام الیکشن کمیشن میں طلب 

41

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) الیکشن کمیشن پاکستان (ای سی پی) نے سیاستدانوں اور امیدواروں کو درپیش سیکورٹی خدشات کا نوٹس لیتے ہوئے نیشنل کاؤنٹر ٹیررازم اتھارٹی (نیکٹا) حکام کو طلب کر لیا۔الیکشن کمیشن نے سیاسی شخصیات اور انتخابی امیدواروں کو خطرات کے حوالے سے جاری ہونے والے انتباہ کا نوٹس لے لیا۔ترجمان الیکشن کمیشن کے
مطابق ای سی پی نے نیکٹا کے نیشنل کوآرڈینیٹر کو آج طلب کرلیا ہے جو سیاستدانوں کو درپیش خطرات کے حوالے سے چیف الیکشن کمشنر کو تفصیلی بریفنگ دیں گے۔ادھر چیف الیکشن کمشنر نے جمعیت علمائے اسلام ف کے رہنما اکرم خان درانی پر ہونے والے قاتلانہ حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے نگراں وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا، آئی جی اور چیف سیکرٹری سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔چیف الیکشن کمشنر کا کہنا ہے کہ تمام حکومتیں انتخابات کے لیے ماحول کو پر امن اور سازگار بنانے کے لیے اقدامات کریں جبکہ تمام امیدواروں کو بلاامتیاز سیکورٹی فراہم کی جائے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن نے متعدد مرتبہ امیدواروں کی سیکورٹی یقینی بنانے کی ہدایت کی تھی، صوبائی حکومت وضاحت کرے کہ بار بار ہدایت کے باوجود سیکورٹی کے انتظامات کیوں نہیں کیے گئے۔خیال رہے کہ 13 جولائی کو جمعیت علمائے اسلام (ف) کے رہنما اور سابق وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے قافلے کو ریموٹ کنٹرول بم سے نشانہ بنایا گیا۔اس واقعے میں اکرم خان درانی محفوظ رہے لیکن بدقسمتی سے 4 افراد جاں بحق اور 3 پولیس اہلکاروں سمیت 13 افراد زخمی ہوئے تھے۔ 10 جولائی کو پشاور کے علاقے یکہ توت میں عوامی نیشنل پارٹی کی انتخابی مہم کے دوران خودکش حملے میں صوبائی اسمبلی کے امیدوار اور بشیر بلور کے صاحبزادے ہارون بلور سمیت 20 افراد جاں بحق اور 48 سے زاید زخمی ہوگئے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ