شینل فوڈز کو اپنی مصنوعات کی  نئی پیکیجنگ کا حکم دے دیا گیا

29

کراچی( اسٹاف رپورٹر)کمپیٹیشن کمیشن آف پاکستان نے شینل السید فوڈز کو دھوکہ دھی پر مبنی تشہیر اور کمپیٹیشن ایکٹ کے سیکشن 10 کی خلاف ورزی پر50 لاکھ روپے جرمانہ عائد کر دیا ہے۔کمپیٹیشن کمپیشن آف پاکستان کو نیشنل فوڈز کی جانب سے شکایت موصول ہوئی تھی کہ شینل فوڈز اپنی مصنوعات کی تشہیر،پیکنگ،فروخت کے لیے نیشنل فوڈزکے ٹر یڈ مارک اور لوگو کی نقل استعال کر رہا ہے۔
اور اپنی مصنوعات کی پیکیجنگ کے لیے بھی جو کلر اسکیم اور ڈیزائن استعمال کر رہے ہیں وہ بھی نیشنل فو ڈز کی مصنوعات کی پیکیجنگ سے بہت حد تک مشابہہ ہے۔ سی سی پی کی جانب سے اس معاملے پر بنا ئی گئی انکوائری کمیٹی کی رپورٹ کے مطابق شینل فوڈز دھو کہ دھی کے زریعے نیشنل فوڈز کے لوگو ،پیکیجنگ،کلرا سکیم اورڈیزائن کی نقل کی مرتکب ہوئی ہے جو کہ نہ صرف نیشنل فوڈز کے کاروباری مفادات کو نقصان پہنچا نے کا باعث ہو سکتا ہے بلکہ صارفین کے لیے بھی جھوٹی اور گمراہ کن معلوما ت کا سبب بن سکتا ہے۔ سی سی پی بنچ نے شینل فوڈز کو کافی وقت دیا کہ وہ اپنی مصنوعات کو نیشنل فوڈز کی پیکیجنگ سے ہٹ کر کو ئی اور منفردانداز کی پیکیجنگ میں پیش کرے ، لیکن اس سلسلے میں شینل فوڈز کی جانب سے کو ئی خا ص کوشش سامنے نہیں آئی اس لئے سی سی پی نے شینل فوڈز پر 50 لاکھ روپے جرمانہ عائد کر دیا ہے اور شینل فوڈز کو اپنی مصنوعات کی نئی پیکیجنگ کا حکم دیا گیا ہے جو کہ نیشنل فوڈز کی مصنوعات کی پیکیجنگ کی کلراسکیم ،ڈیزائن، سائزاور شکل سے مشابہہ نہ ہو۔ سی سی پی کو کمپیٹیشن ایکٹ کے تحت یہ اختیار حاصل ہے کہ وہ صارفین اور کاروباری اداروں کو دھوکہ دھی پر مبنی تشہیر اور کمپیٹیشن مخالف سر گرمیوں سے بچاؤ کے لیے اقدامات کرے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ