امریکی تعاون سے ’اینٹی بیلسٹک‘ میزائل کا اسرائیلی تجربہ

52
مقبوضہ بیت المقدس: اسرائیل کا اینٹی بیلسٹک میزائل تجربے کے دوران فضا میں بلند ہو رہا ہے
مقبوضہ بیت المقدس: اسرائیل کا اینٹی بیلسٹک میزائل تجربے کے دوران فضا میں بلند ہو رہا ہے

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) اسرائیل نے امریکا کے تعاون سے ’اینٹی بیلسٹک‘ میزائل دفاعی نظام کا کامیاب تجربہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے مطابق ’ایرو 3‘ نامی اس دفاعی نظام کی تیاری میں امریکا نے صہیونی ریاست کے ساتھ بھرپور تعاون کیا ہے۔عبرانی نیوز ویب سائٹ کان کے مطابق نئے فضائی دفاعی نظام کے کامیاب تجربے کے بعد صہیونی ریاست کا دفاع ناقابل تسخیر ہوچکا ہے۔ نئے نظام کی کامیابی کے بعد صہیونی کسی بھی طرف سے داغے گئے بیلسٹک میزائل کو فضا ہی میں تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔اسرائیلی وزارت دفاع کے ایک عہدے دار بواز لیف نے عبرانی ریڈیو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اینٹی بیلسٹک میزائل فضا میں گہرائی تک داغا گیا، تاہم یہ میزائل کسی ہدف تک نہیں لگا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ تجربے کے دوران ایک فرضی ہدف مقرر کیا گیا تھا۔ دوسری جانب صہیونی ریاست کے وزیرخزانہ موشے کحلون نے مقبوضہ مغربی کنارے کے وسطی شہر رام اللہ میں فلسطینی وزیراعظم رامی الحمد اللہ سے ملاقات کی۔ وزیراعظم رامی الحمد اللہ کے دفتر سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی وزیر اور فلسطینی وزیراعظم کے درمیان ہونے والی ملاقات میں غرب اردن میں ہزاروں یہودی مکانات کی تعمیر کے اسرائیلی اقدامات، فلسطینیوں کی رقوم کی کٹوتی اور دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ