حیدرآبادمیں کمسن بھائی بہن اغوا وزیادتی کے بعد قتل،لواحقین کا احتجاج

126
حیدرآباد: اغوا ، قتل و زیادتی کے شکار کمسن بہن بھائی کی غمزدہ ماں صحافیوں کو تفصیلات بتارہی ہے
حیدرآباد: اغوا ، قتل و زیادتی کے شکار کمسن بہن بھائی کی غمزدہ ماں صحافیوں کو تفصیلات بتارہی ہے

حیدرآباد(اسٹاف رپورٹر) جی او آر تھانے کی حدودسے اغوا ہونے والے کمسن بہن بھائی کے قاتلوں کی گرفتاری کے لیے معصوم بچی رخسانہ عرف رخی کی نعش کے ہمراہ اہل علاقہ کا گریژن اور پریس کلب کے سامنے دھرنا ۔ تفصیلات کے مطابق جی او آر تھانے کی حدودسے 4 روز قبل لاپتہ ہونے والے 10 سالہ عبدالقادر ولد انتظار سیال اور اس کی 7سالہ بہن رخسانہ عرف رخی کوزیادتی کے بعد بے دردی کے ساتھ قتل کردگیا گیا ،8جولائی کو دونوں بہن بھائی دہی لینے گھر سے باہر نکلے تھے اور لاپتہ ہوگئے جس کے بعد اسی رات کو عبدالقادر شدید زخمی حالت میں کوہسار کے علاقے سے ملاجو کہ اگلے روز زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا جبکہ رخسانہ کی تلاش جاری تھی بدھ کی رات بچی رخسانہ عرف رخی کی نعش ملی جسے بے دردی سے قتل کیا گیا تھا ۔مقتولین کے والد انتظار سیال نے بتایا کہ متعلقہ پولیس اگر بروقت کارروائی کرتی تو شاید یہ سانحہ رونما نہ ہوتا لیکن پولیس نے روایتی طریقے سے گمشدگی کی رپورٹ درج کی او ر خاموش ہوگئی جس کے بعدزخمی حالت میں قادر ملا ،کیس میں پولیس حدود کے جھگڑے میں الجھی رہی اور لاش کا پوسٹ مارٹم تک نہیں کرایا پھر رخسانہ کی تلاش میں لاپرواہی کا مظاہرہ کیا گیا جس کے باعث وہ بھی بے رددی سے قتل کردی گئی۔ انہوںنے وزیراعظم ،چیف جسٹس سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیاہے کہ واقعے کا سختی سے نوٹس لیں اور قاتل کو پھانسی دیکر نشان عبرت بنایاجائے اور سستی کا مظاہرہ کرنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف بھی سخت کارروائی کی جائے ۔
کمسن بچی قتل