کارلفٹنگ کی 1500 وارداتوں میں ملوث ملزم گرفتار

31

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) ایس ایس پی اے سی ایل سی اسد رضا نے کراچی میں گاڑیوں کی چوری اور چھیننے کا منظم کاروبار کرنے والے گروہ کے سرپرست اعلیٰ کار لفٹر ڈان قطب الدین مندرانی عرف حاجی پاکستانی کو کراچی کینٹ سے گرفتا رکرلیا ہے۔ انہوں نے جمعرات کو اپنے آفس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ ملزم قطب الدین عرف حاجی پاکستان کاخاندان عرصہ دراز سے کارلفٹنگ کی
وارداتیں کرتاچلاآرہاہے۔ملزم کارلفٹنگ کی 1500 سے زائد وارداتوں میں ملوث ہے ۔ملزم ساتھیوں کے ہمراہ گاڑیاں چوری کے بعد جعفرآباد میں پنچ کرکے اس کا نمبر تبدیل کردیتے تھے اور ملزم کراچی سے چوری شدہ گاڑیوں کے چیسس نمبروں کی تبدیلی کے بعد جعلی کاغذات بنواکر فروخت کرتاتھا، ملزم حاجی پاکستانی کا والد صدرالدین 25سالوں تک گاڑی چوری کی وارداتیں کرتارہا،ملزم سے 3 عدد سرکاری گاڑیاں برآمد کرالیں،ملزم کا بھائی فخر الدین سال 2002ء میں 32 مقدمات میں گرفتار ہواتھا، ملزم حاجی پاکستان کاخاندان گزشتہ کئی دہائیوں سے گاڑی چوری اور گاؤں دیہاتوں میں جانوروں کی چوری کی وارداتوں میں ملوث رہا ہے ۔ ملزم حاجی پاکستانی گروپ کار اسنیچنگ کے لیے ملزمان کو مختلف شہروں میں بھیجتے تھے اور ان سے شکار پور ، خیر پور ، حیدر آباد ، جیکب آباد میں گاڑیوں کی وصولی کر تے ہیں۔ ا س کام کے لیے انہوں نے رائیڈر رکھے ہوئے ہیں جو اسنیچر ز سے گاڑیاں وصول کر کے جعفر آباد جھٹ پٹ پہنچاتے تھے ۔ جن میں شوکت مغیری ، لا لہ نصیر ، مٹھل، محبوب جمالی شامل ہیں۔ حاجی پاکستانی گروپ کے کارندوں کو کراچی کے مختلف اضلاع میں بھیجتا رہا ہے ، جن میں شاہ محمد چانڈیو عرف فوجی کا گروپ شامل ہے ، ملزم کرولا ایل جی ساڑھے 3 لاکھ ، ویگو 7 لاکھ اور ریو گاڑی ساڑھے 9 لاکھ روپے میں خرید تا اور ڈیڑ ھ لاکھ روپے منافع پر فروخت کر دیتا تھا ، ملزم کو پشاور میں موجود ایک کارندہ 30ہزار روپے کے عوض جعلی نمبرپلیٹ اور کاغذات بنا کر بھیجا کر تا تھا ، ایس ایس پی اسد کا کہنا ہے کہ سی سی ٹی وی کیمروں کی افادیت میں اضافہ کر رہے ہیں جس کی وجہ سے ملزمان کو آسانی سے گرفت میں لیا جا سکتا ہے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ