جماعت اسلامی نے آج ملک گیر احتجاج کا اعلان کردیا

245
لاہور: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق سے سابق گورنر بلوچستان سید فضل آغا ملاقات کررہے ہیں‘ حافظ ادریس‘ فرید پراچہ اور دیگر بھی موجود ہیں
لاہور: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق سے سابق گورنر بلوچستان سید فضل آغا ملاقات کررہے ہیں‘ حافظ ادریس‘ فرید پراچہ اور دیگر بھی موجود ہیں

لاہور(نمائندہ جسارت)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے ٹرمپ کی طرف سے القدس کو اسرائیل کا دارالخلافہ قرار دینے کے خلاف آج ملک گیر یوم احتجاج کی اپیل کرتے ہوئے وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیاہے کہ ترکی کے صدر رجب طیب اردوان کی طرف سے 13 دسمبر کو بلائے گئے او آئی سی کے اجلاس میں شرکت کریں اور اس معاملے پر مسلم ممالک کو متحد کرنے کی کوششوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں ۔ انہوں نے کہاکہ بیت المقدس پر یہودی قبضے کو مضبوط کرنے کے امریکی منصوبے کی ناکامی کے لیے امت مسلمہ کا ایک پیج پر ہونا ضروری ہے ،جس میں پاکستان کا کردار نمایاں ہونا چاہیے ۔ ٹرمپ کی طرف سے القد س کو اسرائیل کا دارالخلافہ قرار دینا جلتی پر تیل ڈالنے کے مترادف ہے ۔ ٹرمپ کے اعلان نے عالمی امن کو خطرے میں ڈال دیاہے ۔ ٹرمپ دنیا کو عالمی جنگ کی آگ میں جھونکنا چاہتاہے تاکہ امریکا میں اپنی تیزی سے گرتی ہوئی ساکھ کو بہتر بناسکے اور اسے امریکا میں موجود یہودی لابی کا اعتماد اور سرپرستی حاصل رہے ۔ سراج الحق نے کہاکہ مسلم دنیا کے حکمرانوں کو متحدہو کر اس پر اپنا مشترکہ لائحہ عمل دینا چاہیے ۔ 22سینیٹر سراج الحق نے ملک کی دینی و سیاسی قیادت کو بھی اپنے باہمی اختلافات کو ایک طرف رکھتے ہوئے قبلہ او ل پر یہودیوں کے مستقل قبضے کی سازشوں کے خلاف متحد ہونے کی ضرورت پر زور دیا اور ملک بھر کے علما و خطیب حضرات سے اپیل کی وہ اپنے خطابات جمعہ میں بیت المقدس کی اہمیت کو واضح کریں اور امریکی اشتعال انگیزیوں کے خلاف منبر و محراب سے آواز بلند کریں ۔ سینیٹر سراج الحق نے قوم سے اپیل کی کہ یوم احتجاج کے مظاہروں ، ریلیوں اور جلسے جلوسوں میں بھر پور شرکت کرکے اپنا دینی و اخلاقی فرض پورا کریں ۔ یہ کوئی علاقائی مسئلہ نہیں ، پوری امت مسلمہ اور انسانیت کا مسئلہ ہے ۔ ہمیں خوشی ہے کہ ٹرمپ کے اس فیصلے کی مذمت چین ، فرانس ، برطانیہ اور دیگر یورپی و مغربی ممالک بھی کر رہے ہیں ۔ ضرورت ہے کہ فوری طور پر اسلامی کونسل کا اجلاس بلا کر امریکا کے اس فیصلے کے خلاف بھر پور آواز اٹھائی جائے تاکہ دنیا کو ایک تباہ کن عالمی جنگ سے محفوظ رکھا جاسکے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ