فرنیچر کے مزید 3 شوروم سیل ، دکاندار وں کا احتجاج

205
محمدی مارکیٹ منظور کالونی میں سونے فرنیچرکا سیل کیا ہوا شوروم ‘ دوسری جانب سے مارکیٹ کے صدر محمد ذیشان گجر دیگر تاجروں کے ہمراہ احتجاجی کیمپ میں موجود ہیں

کراچی(اسٹاف ر پورٹر ) فرنیچر کے مزید 3شوروم سیل ،محمدی فرنیچر مارکیٹ کے دکانداروں کا ایکسپریس وے پر احتجاجی دھرنا،تاجروں نے شوروم ڈی سیل کرنے تک مارکیٹ کو غیر معینہ مدت تک بند کردیا ، صرف رقبے کے حساب سے سیلز ٹیکس میں شامل کرنا زیادتی ہے،حکومت اور ایف بی آر قانون میں ترمیم کرے،ذیشان گجر،رانا وحید اور دیگر کا درعمل ۔تفصیلات کے مطابق ایف بی آر کی جانب سے سیلز ٹیکس کے حوالے سے جاری مہم کے دوران گزشتہ ہفتے محمدی فرنیچر مارکیٹ منظور کالونی میں 2 شوروم سیل کیے گئے تھے جس کے خلاف تاجروں نے شدید احتجاج کیا تھا جب کہ گزشتہ روز ایف بی آر نے مزید کارروائی کرتے ہوئے سونی فرنیچر سمیت 3شوروم کو سیل کردیا، جس پر محمدی فرنیچر مارکیٹ منظور کالونی کے دکانداروں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے پوری مارکیٹ کو غیر معینہ مدت تک کے لیے بند کردیا اور ایکسپریس وے پر احتجاجی کیمپ قائم کرتے ہوئے دھرنا دے دیا۔ اس موقع پر محمدی فرنیچر مارکیٹ ایسوسی ایشن کے صدر محمد ذیشان گجر،آل پاکستان فرنیچر ایسوسی ایشن کے نائب صدر رانا وحید ،محمدی فرنیچر مارکیٹ کے چیئرمین ملک محمد اکرم،نائب صدر حاجی عبدالستار،وائس چیئرمین رانا محمد اشرف،جنرل سیکرٹری ملک راشد ،فنانس سیکرٹری محمد اقبال،ڈپٹی سیکرٹری نذر حسین،رابطہ سیکرٹری حامد حفیظ اور دیگر موجود تھے۔ احتجاجی کیمپ پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے محمد ذیشان گجر اور رانا وحید نے میڈیا کو بتایا کہ فرنیچر کے شورومز کو سیلز ٹیکس میں صرف رقبہ کی وجہ سے شامل کیا گیا ہے جو زیادتی ہے ، بڑی دکانیں ہماری کاروباری مجبوری ہے جبکہ ہم کاروباری ٹرن اوور کے تناسب سے سیل ٹیکس میں شامل نہیں ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایف بی آر حکام فرنیچر کے شعبے کے ساتھ زیادتی کررہے ہیں۔