برطانیہ میں کورونا کا خوف، شہریوں اور سیاحوں نے لندن چھوڑنا شروع کردیا

317

لندن: کورونا وائرس کی دوسری لہر اور نئی قسم سے برطانیہ میں خوف وہراس پھیل گیا اور لندن سے نکلنے کے لیے گاڑیوں کی لمبی لمبی قطاریں لگ گئیں جبکہ بارہ ممالک نے سفری پابندیاں عائد کر دیں۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق کورونا وائرس کی نئی قسم نے برطانیہ میں افراتفری پھیلا دی اور وائرس کی یہ نئی شکل لندن اور جنوب مشرقی برطانیہ میں تیزی سے پھیل گئی ہے جبکہ اٹلی میں بھی برطانیہ میں سامنے آنے والے نئی شکل کے کورونا وائرس کے پہلے کیس کی تشخیص ہو گئی اور اس صورتحال پر غور کیلئے برطانیہ اور یورپی یونین کے اہم اجلاس آج طلب کر لیا ہے۔

برطانی وزیر صحت میٹ ہینکوک کا کہناہےکہ نیا وائرس قابو سے باہر ہے، شہریوں اور سیاحوں کی بڑی تعداد لندن چھوڑ رہی ہے جبکہ ہزاروں افراد ائیر پورٹس، سڑکوں اور ریلوے اسٹیشنز پر پھنس کر رہ گئے جبکہ سڑکوں پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں اور ائیرپورٹس اور ریلوے اسٹیشنز پر رش ہے۔

دوسری طرف  کورونا وائرس کی نئی قسم سے خوف میں جرمنی، فرانس، آئرلینڈ، اٹلی، نیدرزلینڈ اور بیلجیئم سمیت بارہ ملکوں نے اپنی پروازیں معطل کر دیں۔

واضح رہے زیادہ تر ممالک کی طرف سے یہ پابندیاں ابتدائی طور پر قلیل مدتی ہیں جبکہ فرانس نے برطانیہ کے لیے خوراک کی سپلائی بھی معطل کردی اور اس حوالے پر آج یورپی یونین کے ہونے والے اجلاس میں مزید مربوط اقدامات پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

دوسری جانب  صورتحال پر برطانوی وزیراعظم بورس جانس نے بھی ہنگامی اجلاس طلب کرلیا اور وزیراعظم نے متاثرہ علاقوں میں پابندیاں نرم کی تھیں جس سے لاکھوں افراد متاثر ہوئے ہیں۔